ترکی صدر رجب طیب اردغان نے نواز شریف کو بتایا اچھا انسان ، مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش

Apr 30, 2017 12:59 PM IST | Updated on: Apr 30, 2017 12:59 PM IST

نئی دہلی : ترکی کے صدر رجب طیب اردغان نے ہندوستان اور پاکستان کو جموں و کشمیر کا مسئلہ بات چیت سے حل کرنے کا مشورہ دیا ہے۔ ترکی صدر نے مجوزہ دورہ ہند سے پہلے ایک انگریزی اخبار کو دیے خاص انٹرویو میں کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کے لئے بات چیت سے بہتر کوئی اور آپشن نہیں ہے۔ انہوں نے اشاروں ہی اشاروں میں ثالثی کی پیشکش بھی کی۔انٹرویو میں ترکی صدر نے کہا کہ پاکستان کے وزیر اعظم نواز شریف سے جموں و کشمیر مسئلے کے حل پر ان کی بات ہوئی تھی۔ خیال رہے کہ ہندوستان مسلسل کشمیر مسئلہ پر دنیا کے کسی دوسرے ملک کی مداخلت کو مسترد کرتا آیا ہے۔

جموں و کشمیر کے مسئلے پر ترکی صدر نے کہا کہ ہندوستان -پاکستان کے درمیان تعلقات بہتر ہو رہے ہیں، اس سے مجھے خوشی ہے، لیکن میں اس بات سے دکھی بھی ہوں کہ 70 سال گزرنے کے باوجود جموں وکشمیر کا تنازعہ دونوں ممالک کے درمیان نہیں حل ہوپایا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان دونوں میرے دوست ہیں، دونوں ممالک سے ہمارے تاریخی تعلقات ہیں، ترکی چاہتا ہے کہ مسئلہ کشمیر پر دونوں ممالک کے درمیان جاری تنازع کا پرامن حل نکلے۔

ترکی صدر رجب طیب اردغان نے نواز شریف کو بتایا اچھا انسان ، مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش

نواز شریف کو اپنا قریبی دوست بتاتے ہوئے کہا کہ میں ان سے مسلسل مسئلہ کشمیر پر تبادلہ خیال کرتا رہتا ہوں، میں انہیں جانتا ہوں، وہ اچھی نیت والے انسان ہیں، تو مجھے لگتا ہے کہ اگر ہم بات چیت کا سلسلہ کھلا رکھیں گے ، تو اس مسئلے کو حل کیا جا سکتا۔خیال رہے کہ ترکی صدر پیر کو وزیر اعظم مودی سے دہلی میں ملاقات کریں گے۔ امید ظاہر کی جا رہی ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان نیوکلیئر سپلائر گروپ میں ہندوستان کی رکنیت کو لے کر بھی بات چیت ہو سکتی ہے۔ ترکی صدر نے آخری مرتبہ 2008 میں ہندوستان کا دورہ کیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز