ترکی حکومت ہندوستانی طلبہ کو اپنے ملک میں حصول تعلیم کے لئے دے گی اسکالرشپ

نئی دہلی۔ ’’ موجودہ دور میں ترکی ایک عظیم معاشی طاقت ور ملک کے طور پر ابھر رہا ہے ،اور روز بروز اس کی معاشی واقتصادی قوت میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔

Apr 29, 2017 07:37 PM IST | Updated on: Apr 29, 2017 07:37 PM IST

نئی دہلی۔  ’’ موجودہ دور میں ترکی ایک عظیم معاشی طاقت ور ملک کے طور پر ابھر رہا ہے ،اور روز بروز اس کی معاشی واقتصادی قوت میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ یہ ملک آج کی تاریخ میں اقتصادی طاقت کے اعتبار سے دنیا کے 16ویں ملک میں شمار کیا جاتا ہے۔اسی وجہ سے یہاں پر دیگر ممالک کے لوگ بڑی تعداد میں سیر وسیاحت،تعلیم وتعلم اور دیگر ضرورت کی وجہ سے آمد ورفت کرتے رہتے ہیں۔  ہندوستان میں ترکی صدر کی موجودہ آمد ہند وترکی کے تعلقات کو مضبوطی و استحکام کے طور پر دیکھا جانا چاہیے،جو دونوں ملک کیلئے ایک سنگ میل کی حیثیت رکھے گا‘‘۔ ان خیالات کا اظہار ترکی کے ماہر صلاح کاراحمد کمال نے کیا ۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ ترکی حکومت ہر سال 5ہزار طلبہ کو اپنے ملک میں حصول تعلیم کیلئے اسکالر شپ مہیا کرواتی ہے جہاں وہ مختلف شعبوں میں داخلہ لیکر اپنے تعلیمی سلسلہ کو جاری وساری رکھتے ہیں۔

ملک کی مشہور اقلیتی یونیورسیٹی جامعہ ملیہ اسلامیہ میں شعبہ ترکش کی جانب سے گزشتہ کئی سالوں سے وہاں کی حکومت کی جانب سے دی جانے والی اسکالر شپ پر یہاں کے طلبہ ماسٹرس کے لئے جا رہے ہیں اور اسی طرح موسم گرما کی چھٹی میں بھی ایک ماہ کیلئے جا کر وہاں کے تعلیمی ماحول سے واقف ہوتے ہیں۔ یہ بہت افسوس کی بات ہے کہ ہندوستان سے بہت کم طلبہ اسکالرشپ فارم کو بھر تے ہیں ،جس کی وجہ سے ان کی تعداد بہت کم ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم بااہل اور باصلاحیت طلبہ کا ہی اسکالرشپ کیلئے انتخاب کرتے ہیں یہ انتخاب تحریری امتحان وانٹرویو کے ذریعے کیا جاتا ہے، انتخاب شدہ طلبہ کو وہاں کی ٹاپ یونیورسیٹیوں میں داخلہ دیا جاتا ہے۔ ابھی وہاں پر تقریبا سترہ ہزار غیر ملکی طلبہ زیر تعلیم ہیں،جن میں سے اکثر اسکالرشپ پر اور کچھ اپنے ذاتی خرچ پر تعلیم حاصل کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ غیر ملکی طلبہ کو پوری سیکورٹی وتحفظ فراہم کیا جاتا ہے،جس کی وجہ سے طلبہ بے خوف وخطرہوکر اپنی تعیلم کو حاصل کرتے ہیں۔

ترکی حکومت ہندوستانی طلبہ کو اپنے ملک میں حصول تعلیم کے لئے دے گی اسکالرشپ

انہوں نے کہا کہ کوئی بھی طلبہ کسی بھی شعبہ میں داخلہ لے سکتا ہے خواہ وہ سوشل سائنس ،انجینیرنگ ،میڈیکل ،ترکش لنگویج یا دیگر فیکلٹی ہی کیوں نہ ہو۔اگر کسی طلبہ کو وہاں کی یونیورسیٹیوں میں پڑھناہے تو وہ www.turkiyescholarship.gov.tr مذکورہ ویب سائڈ پر جاکر پوری تفصیل حاصل کرسکتا ہے۔ہم اپنے ملک میں آنے والے طلبہ وطالبات کا پر جوش خیر مقدم کریں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز