جنوبی کشمیر میں جنگجوؤں کے خلاف بڑے پیمانے پر آپریشن جاری، 2 جنگجو ہلاک

Jul 15, 2017 02:04 PM IST | Updated on: Jul 15, 2017 02:05 PM IST

سری نگر۔ جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ کے ترال میں جنگجوؤں اور سیکورٹی فورسز کے مابین جاری ایک مسلح تصادم میں ابھی تک دو جنگجوؤں کو ہلاک کیا جاچکا ہے۔ مسلح تصادم ترال کے جنگلاتی علاقہ گوجر بستی ونتون میں واقع ستورا نامی گاؤں میں جاری ہے۔

ترال سے موصولہ اطلاعات کے مطابق مسلح تصادم میں جنگجوؤں کے مارے جانے کی خبر پھیلتے ہی ستورا میں مقامی لوگوں اور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپیں شروع ہوئیں جن میں کم از کم آدھ درجن احتجاجی زخمی ہوئے ہیں۔ ستورا کے علاوہ بس اسٹینڈ ترال میں بھی احتجاجیوں اور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپیں ہوئی ہیں۔ اطلاعات کے مطابق ترال میں مسلح تصادم کے پیش نظر موبائیل انٹرنیٹ خدمات کو احتیاطی اقدامات کے طور پر منقطع کردیا گیا ہے۔

جنوبی کشمیر میں جنگجوؤں کے خلاف بڑے پیمانے پر آپریشن جاری، 2 جنگجو ہلاک

ہندوستانی فوج: فائل فوٹو

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ترال کے ستوارا نامی گاؤں میں جنگجوؤں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر فوج کی 42 راشٹریہ رائفلز اور جموں وکشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ نے مذکورہ گاؤں میں ہفتہ کی علی الصبح مشترکہ تلاشی آپریشن شروع کیا۔ انہوں نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز جب ستورا میں ایک مخصوص جگہ کی جانب پیش قدمی کررہے تھے تو وہاں موجود جنگجوؤں نے ان پر فائرنگ شروع کی۔ ذرائع نے بتایا ’سیکورٹی فورسز نے جوابی فائرنگ کی جس میں دو جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا‘۔ انہوں نے بتایا کہ ستورا گاؤں جو کہ جنگلاتی علاقہ میں آباد ہے، میں طرفین کے مابین مسلح تصادم آخری اطلاعات ملنے تک جاری تھی۔

اس دوران ریاستی پولیس سربراہ ڈاکٹر ایس پی وید نے بتایا کہ جنگلاتی علاقہ میں محصور جنگجوؤں کے خلاف آپریشن بڑے پیمانے پر جاری ہے۔ انہوں نے بتایا ’تاحال دو جنگجوؤں کو ہلاک کیا جاچکا ہے‘۔ ڈاکٹر وید نے بتایا ’کچھ جنگجوؤں نے ایک گپھا میں پناہ لے رکھی ہے۔ ان کو ہلاک کرنے کے لئے آپریشن جاری رکھا گیا ہے‘۔ ایک رپورٹ کے مطابق مسلح تصادم میں مارے گئے جنگجوؤں کا تعلق جنگجو تنظیم جیش محمد سے ہے۔ مذکورہ رپورٹ کے مطابق جنگجوؤں کو ہلاک کرنے کے لئے پیرا کمانڈوز کی بھی مدد لی جارہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز