جموں وکشمیر پولیس کا بانہال حملے کا معمہ حل کرنے کا دعویٰ ، غضنفر اقبال کھانڈے اور عارف وانی گرفتار

جموں وکشمیر پولیس نے 20 ستمبر کی شام کو ضلع رام بن کے بانہال میں جواہر ٹنل کے نزدیک واقع ایس ایس بی کیمپ پر ہونے والے مشتبہ جنگجویانہ حملے میں ملوث 2 جنگجوؤں کی گرفتاری کا دعویٰ کیا ہے۔

Sep 22, 2017 01:16 PM IST | Updated on: Sep 22, 2017 01:16 PM IST

جموں: جموں وکشمیر پولیس نے 20 ستمبر کی شام کو ضلع رام بن کے بانہال میں جواہر ٹنل کے نزدیک واقع ایس ایس بی کیمپ پر ہونے والے مشتبہ جنگجویانہ حملے میں ملوث 2 جنگجوؤں کی گرفتاری کا دعویٰ کیا ہے۔ ایک سینئر پولیس عہدیدار کے مطابق 20 ستمبر کو جواہر ٹنل کے نذدیک ایس ایس بی کیمپ پر ہوئے حملے کے حوالے سے بانہال سے گذشتہ نصف کو دو جنگجوؤں کی گرفتاری عمل میں لائی گئی‘۔ انہوں نے بتایا کہ حملے میں ملوث تیسرے جنگجو کی تلاش جاری ہے۔ مذکورہ پولیس عہدیدار نے بتایا ’گرفتار شدہ افراد مقامی ہیں اور گذشتہ کئی دنوں سے اپنے گھروں سے غائب تھے۔ ان لوگوں نے جنگجوؤں کی صفوں میں شمولیت اختیار کی تھی‘۔

گرفتار شدگان کی شناخت غضنفر اقبال کھانڈے اور عارف وانی کے بطور کی گئی ہے۔ دونوں کی عمر 20 برس کے آس پاس ہے۔ مفرور جنگجو کی شناخت عاقب کے بطور ظاہر کی گئی ہے۔ ذرائع نے بتایا ’تینوں ملوثین کا تعلق ضلع رام بن کے بانہال سے ہے‘۔ انہوں نے بتایا ’گرفتار شدگان سے دو رائفلیں بشمول ایک انساس اور ایک اسالٹ رائفل (اے آر 41) برآمد کی گئی ہیں۔ یہ رائفلیں انہوں نے ایس ایس بی کیمپ سے اڑالی تھیں‘۔

جموں وکشمیر پولیس کا بانہال حملے کا معمہ حل کرنے کا دعویٰ ، غضنفر اقبال کھانڈے اور عارف وانی گرفتار

پولیس ذرائع نے بتایا ’معاملے کی تحقیقات کا سلسلہ جاری ہے‘۔ خیال رہے کہ 20 ستمبر کی شام کو بانہال میں واقع ایس ایس بی کیمپ پر ہونے والے مشتبہ جنگجویانہ حملے میں ایس ایس بی کا ایک ہیڈ کانسٹیبل ہلاک جبکہ ایک اے ایس آئی زخمی ہوا۔ اس دوران جموں وکشمیر پولیس نے اپنے آفیشل ٹویٹر اکاؤنٹ پر ایک ٹویٹ میں کہا ’بانہال حملے میں ملوث دو جنگجوؤں غضنفر اور عارف کو گرفتار کرلیا گیا۔ تیسرے جنگجو کی تلاش جاری ہے۔ کیمپ سے چھینے گئے ہتھیار بھی برآمد کئے گئے ہیں‘۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز