پلوامہ میں مسلح تصادم میں دو دہشت گرد ہلاک ، ضلع میں مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپیں

Jul 30, 2017 02:40 PM IST | Updated on: Jul 30, 2017 02:40 PM IST

سری نگر: جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ کے ٹہاب میں اتوار کی صبح جنگجوؤں اور سیکورٹی فورسز کے مابین ہونے والے ایک مسلح تصادم میں حزب المجاہدین سے وابستہ دو دہشت گرد کو ہلاک کیا گیا ہے۔ دہشت گردوں کی ہلاکت کے بعد علاقہ میں احتجاجی مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے مابین شدید جھڑپیں ہوئیں جن میں متعدد افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ ان اطلاعات کے مطابق ایک احتجاجی نوجوان گولی لگنے سے شدید زخمی ہوگیا ہے۔

انتظامیہ نے پورے ضلع پلوامہ میں انٹرنیٹ خدمات احتیاطی اقدام کے طور پر منقطع کردی ہے۔ وزارت دفاع کے ترجمان کرنل راجیش کالیا نے جھڑپ کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے بتایا کہ ضلع پلوامہ کے ٹہاب میں دہشت گردوں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر فوج اور جموں وکشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ (ایس او جی) نے گزشتہ رات مذکورہ علاقہ میں تلاشی آپریشن شروع کیا۔

پلوامہ میں مسلح تصادم میں دو دہشت گرد ہلاک ، ضلع میں مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپیں

(Photo: News18india)

انہوں نے بتایا کہ تلاشی آپریشن کے دوران علاقہ میں موجود دہشت گردوں نے سیکورٹی فورسز کا محاصرہ توڑنے کی کوشش کی۔ ترجمان نے بتایا ’ ایک رہائشی مکان میں موجود دہشت گردوں نے محاصرہ توڑنے کے لئے سیکورٹی فورسز پر فائرنگ کی۔ تاہم سیکورٹی فورسز نے جوابی فائرنگ کرتے ہوئے دو دہشت گردوں کو ہلاک کیا‘۔ مسلح تصادم کے مقام سے کچھ اسلحہ اور گولہ بارود بھی برآمد کیا گیا ہے۔ ایک رپورٹ کے مطابق مارے گئے دہشت گردوں کی شناخت شارق احمد ساکن گلزار پورہ پلوامہ اور شوکت عرف شبیر ساکن مہند بجبہاڑہ کے بطور کی گئی ہے۔ مذکورہ رپورٹ کے مطابق دنوں جنگجوؤں کا تعلق جنگجو تنظیم حزب المجاہدین سے تھا۔

دریں اثنا مسلح تصادم کے مقام پر احتجاجی مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپیں ہوئی ہیں۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق ٹہاب میں دو جنگجوؤں کی ہلاکت کی خبر پھیلنے کے بعد نزدیکی دیہات سے لوگوں نے ٹہاب کا رخ کیا۔ تاہم جب احتجاجی لوگوں نے اس جگہ کی جانب جانے کی کوشش کی جہاں دو جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا تھا، تو سیکورٹی فورسز نے ان کا راستہ روکتے ہوئے آنسو گیس کے گولے داغے۔ اطلاعات کے مطابق سیکورٹی فورسز کی کاروائی سے احتجاجی لوگ مشتعل ہوئے اور سیکورٹی فورسز پر پتھراؤ کرنے لگے۔

موصولہ اطلاعات کے مطابق سیکورٹی فورسز نے احتجاجیوں کو منتشر کرنے کے لئے بعدازاں آنسو گیس، چھرے والی بندوقوں اور مبینہ طور پر بندوقوں کی گولیوں کا استعمال کیا۔ ایک احتجاجی نوجوان کے گولی لگنے سے شدید طور پر زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔ مذکورہ نوجوان کو تشویشناک حالت میں سری نگر منتقل کیا گیا ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ پورے ضلع پلوامہ میں انٹرنیٹ خدمات احتیاطی اقدام کے طور پر منقطع کردی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا ’انٹرنیٹ خدمات کی معطلی کا اقدام کسی بھی طرح کی افواہوں کو پھیلنے سے روکنے کے لئے احتیاطی اقدام کے طور پر اٹھایا گیا ہے‘۔ مقامی ذرائع نے بتایا کہ جنگجوؤں کی ہلاکت کے خلاف ضلع پلوامہ کے مختلف حصوں میں اتوار کو مکمل ہڑتال کی گئی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز