مودی حکومت نے مانا، ملک میں بڑھ رہی بے روزگاری کی شرح، اعداد و شمار نے بتا دی حقیقت!۔

Feb 06, 2017 09:18 PM IST | Updated on: Feb 06, 2017 09:18 PM IST

نئی دہلی۔ وزیر اعظم نریندر مودی بھلے ہی دعوی کریں کہ ان کی حکومت نے روزگار کے مواقع پیدا کئے ہیں، لیکن حقیقت کچھ اور تصویر پیش کر رہی ہے۔ مرکزی حکومت نے آج راجیہ سبھا میں قبول کیا کہ ملک میں بے روزگاری کی شرح میں اضافہ ہو رہا ہے، خاص طور پر پسماندہ طبقے میں۔ وقفہ سوال کے دوران ایک سوال کے جواب میں منصوبہ بندی کے وزیر مملکت راؤ اندرجیت سنگھ نے کہا کہ مجموعی طور پر بے روزگاری کی شرح میں اضافہ ہوا ہے، لیکن یہ شرح دیگر پسماندہ طبقے (او بی سی) کے لئے زیادہ ہے۔

اندرجیت سنگھ نے راجیہ سبھا میں ایک سوال کے جواب میں یہ معلومات دی۔ انہوں نے کہا کہ مختلف سماجی گروپوں کے درمیان فرق کی بنیادی وجہ غربت، ناخواندگی، اجرت لیبر پر انحصار وغیرہ ہیں اور حکومت مختلف سماجی، اقتصادی ترقی کے پروگراموں کے ذریعے ان کا حل نکال رہی ہے۔ وزیر نے کہا کہ کل بے روزگاری کی شرح پانچ فیصد ہے، جبکہ یہ او بی سی کے لئے 5.2 فیصد ہے۔ سال 2013 میں بے روزگاری کی شرح 4.9 فیصد، 2012 میں 4.7 فیصد اور 2011 میں 3.8 فیصد تھی۔

مودی حکومت نے مانا، ملک میں بڑھ رہی بے روزگاری کی شرح، اعداد و شمار نے بتا دی حقیقت!۔

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز