اقلیتی وزیر مختار عباس نقوی کی بہن مطلقہ خواتین کے حق کے لئے لڑیں گی لڑائی

بریلی۔ مرکزی اقلیتی وزیر مملکت (آزادانہ چارج) مختار عباس نقوی کی بہن فرحت نقوی نے اب مطلقہ خواتین کو انصاف دلانے کے لئے’میرا حق‘ ادارے کے ذریعے لڑائی لڑنے کا اعلان کیا ہے۔

May 03, 2017 04:14 PM IST | Updated on: May 03, 2017 04:14 PM IST

بریلی۔  مرکزی اقلیتی وزیر مملکت (آزادانہ چارج) مختار عباس نقوی کی بہن فرحت نقوی نے اب مطلقہ خواتین کو انصاف دلانے کے لئے’میرا حق‘ ادارے کے ذریعے لڑائی لڑنے کا اعلان کیا ہے۔ یہ ادارہ کسی بھی مذہب یا ذات کی طلاق شدہ اور مسلم سماج کی تین طلاق شدہ خواتین کی ایف آئی آر درج کرنے سے لے کر مفت میں قانونی مدد فراہم كرائےگا۔ ’میرا حق‘ نے سب سے پہلے بریلی کی تین طلاق سے متاثرہ انشا خان کی قانونی لڑائی لڑنے کے ساتھ ہی وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ سے ملاقات کرکے انصاف دلانے کا بھروسہ بھی دلایا۔ انہوں نے کہا کہ طلاق معاشرے کے لئے ناسور بن چکا ہے۔ مسلم اور ہندو معاشرے میں طلاق کے بارے میں تمام لوگوں کو معلومات ہی نہیں ہے۔ اس کے غلط استعمال سے لاکھوں خواتین کی زندگی برباد ہو رہی ہے۔ محترمہ نقوی نے سماج سے طلاق کا ’کلنک‘ مٹانے کا حل کیا ہے۔

محترمہ نقوی نے بتایا کہ علاقے کے مٹكي چوکی کی انشا خان کے شوہر اکرم خاں نے چھ ماہ پہلے طلاق دے دی تھی۔ جہیز کی واپسی نہیں کی اور نہ ہی مہر کی رقم ادا کی۔ انہوں نے کہا کہ ایسی مطلقہ خواتین کو وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ سے بھی انصاف دلانے کی بات کریں گی۔ محترمہ نقوی نے یہاں صحافیوں کو بتایا کہ وہ اس حساس معاملے پر کچھ الگ ہٹ کر کرنا چاہتی ہیں۔ ان کا کہنا ہے، ہندو اور مسلم معاشرے میں تعلیم کی کمی کی وجہ سے چھوٹی چھوٹی باتوں پر طلاق دی جا رہی ہے۔ اس میں دونوں ہی مذہب کی خواتین آتی ہیں۔ انہیں انصاف دلانے کی کوشش کافی وقت سے چل رہی ہے لیکن اب آگے طلاق سے کسی اور عورت کی زندگی برباد نہ ہو، لہذا طلاق کے خلاف نوجوانوں کو بیدار کیا جائے گا۔ یہ مہم ملک بھر میں مطلقہ خواتین کے تعاون سے چلے گی۔ طویل وقت سے سماجی خدمت کرنے والی فرحت نقوی نے کہا، ایک دوسرے پر الزام ڈالنے سے مسئلہ حل نہیں ہو گا۔ لہذا اس کو جڑ سے ختم کرنے کے لئے نوجوانوں کو بھی آگے آنا ہوگا ۔ سماج سے طلاق کا’کلنک‘ مٹانے کے بعد ہی سکون سے وہ سکون کی سانس لیں گی۔

اقلیتی وزیر مختار عباس نقوی کی بہن مطلقہ خواتین کے حق کے لئے لڑیں گی لڑائی

علامتی تصویر: رائٹرز

اس کے علاوہ شہر کے اعلی حضرت خاندان کی سابق بہو ندا خان نے بھی مطلقہ خواتین کی مدد کے لئے تنظیم بنا کر لڑائی لڑنے کا اعلان کیا ہے۔ یہ تنظیم مطلقہ خواتین کی حق کے لئے عدالت میں پیروی کرے گی۔ ندا خان اور اعلی حضرت خاندان کے طلاق سے پہلے کے شوہر شيران رضا خاں کے درمیان طلاق کے سلسلے میں عدالت میں تنازع چل رہا ہے۔ ندا نے جہیز واپس نہ کرنے کا الزام لگاتے ہوئے فیملی عدالت میں عرضی دائر کی ہے۔ ندا خان نے کل شام یہاں صحافیوں کو بتایا کہ مطلقہ خواتین کے حق کے لئے وہ مسلسل عدالتوں میں پیروی کر رہی ہیں۔ ان کا خیال ہے کہ جنگ لمبی چلے گی، یہ جنگ اب اکیلے لڑنا ممکن نہیں ہے۔ لہذا تنظیم کی ضرورت ہے۔ محترمہ خان نے کہا کہ اس میں مطلقہ خواتین ہی رکن ہوں گی۔ انہوں نے دعوی کیا کہ مطلقہ خواتین کے حق کی لڑائی لکھنؤ اور دہلی تک لڑی جائے گی۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز