اناؤ اجتماعی عصمت دری معاملہ:سی بی آئی نے ممبر اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر پر لگے ریپ چارج کی تصدیق کی

اناؤ اجتماعی عصمت دری معاملے میں سی بی آئی نے بی جے پی ایم ممبر اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر کے ذریعے نابالغ لڑکی کے ریپ کے الزام میں کی تصدیق کی ہے۔

May 11, 2018 08:05 AM IST | Updated on: May 11, 2018 08:10 AM IST

اناؤ اجتماعی عصمت دری معاملے میں سی بی آئی نے بی جے پی ممبر اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر کے ذریعے نابالغ لڑکی کے ریپ کے الزام میں کی تصدیق کی ہے۔سی بی آئی کی جانچ میں پتہ چلا ہے کہ ملزم ایم ایل اے نے ماکھی گاؤں میں چار جون کو نابالغ کے ساتھ اپنے گھر میں ریپ کیا تھا۔ملزم کے ساتھی ششی سنگھ کے اہم کردار کی بھی تصدیق ہوئی ہے۔

کیا ہے معاملہ؟

اناؤ اجتماعی عصمت دری معاملہ:سی بی آئی نے ممبر اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر پر لگے ریپ چارج کی تصدیق کی

ریپ ملزم کلدیپ سنگھ سینگر (تصویر۔پی ٹی آئی)۔

Loading...

بتادیں کہ 4 جون 2017 کو ماکھی گاؤں کے ہی شبھم اور اس کا ساتھی کانپور کے چوبے پور کے رہنے والے اودھیش تواری اغوا کرکے لے گئے ۔متاثرہ کی ماں نے ماکھی تھانے میں معاملے کی تحریر دی۔جس میں ممبر اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر پر پڑوس کی ایک خاتون کے ذڑیعے بہانے سے گھر بلاکر ریپ کرنے اور اس کے بعد اس کے گرگوں کے ذریعے اجتماعی عصمت دری کرنے کا الزام لگایا۔لیکن پولیس نے تب رپورٹ درج نہیں کی۔

واضح ہو کہ 11 جون 2017 کو متاثرہ نے عدالت کا رخ کیا۔کورٹ کے حکم پر ملزم اودھیش تیواری،شبھم تیواری اور دیگر کے خلف مقدمہ درج کیا گیا۔لیکن مقدمے میں ایم ایل اے اور ملزم خاتون کا نام نہیں تھا۔،

بتادیں کہ 3 اپریل 2018 کو ممبر اسمبلی کے بھائی اتل سنھ نے کیس واپس لینے کیلئے متاثرہ پر دباؤ بنایا۔جب والد کے ذریعے انکار کیا تو اس کی بے رحمی سے پتائی کی گئی اور فرضی مقدمہ لکھواکر اسے جیل بھجوا دیا۔

یہ بھی واضح ہو کہ 8 اپریل 2018 کو متاثرہ نے اہل خانہ سمیت سی ایم کی رہائش گاہ کے باہر خودکشی کی کوشش کی۔

آ پ کو بتادیں کہ 9 اپریل 2018کو متاثرہ کے والد کی اناؤ جیل میں موت ہو گئی۔

۔10اپریل 2018 کو بی جے پی ایم ایل اے کے بھائی اتل سنگھ کو گرفتار کیا گیا۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز