نوٹوں کی منسوخی سے غریب، مزدور اور کسان پریشان رہے : اکھلیش

Feb 18, 2017 08:39 PM IST | Updated on: Feb 18, 2017 08:39 PM IST

جالون / مہوبہ : سماج وادی پارٹی (ایس پی) صدر اور اتر پردیش کے وزیر اعلی اکھلیش یادو نے کہا کہ مرکزی حکومت کے نوٹوں کی منسوخی کے فیصلے سے ملک کے غریب، مزدور اور کسانوں کو اپنے ہی پیسوں کیلئے قطارمیں کھڑا ہونے پر مجبور کر دیاگیا۔ مسٹر یادو نے آج بندیل کھنڈ میں انتخابی عوامی جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت کے نوٹوں کی منسوخی کے فیصلے سے عوام پریشان ہوئے۔ لوگ کاروبار چھوڑ اپنے ہی پیسوں کیلئے قطار میں کھڑے ہونے پر مجبور ہوگئے۔ مرکزی حکومت نے نوٹوں کی منسوخی سے بدعنوانی، دہشت گردی اور کالا دھن ختم ہونے کا جھوٹا دعوی کر لوگوں کو گمراہ کیا ۔

ریاست میں مخلوط حکومت بننے دعوی کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سماج وادی پارٹی کانگریس اتحاد فرقہ وارانہ قوتوں سے لڑنے کے لئے بنایا گیا ہے جس کے سبب پتھر والی حکومت کی پھوپھی (مایاوتی) اور بی جے پی کے لیڈروں کے چہروں پر ہوائیاں اڑنے لگی ہیں۔ اتحاد سے دونوں پریشان ہیں۔ بندیل کھنڈ میں مہوبہ ضلع کے کلپہاڑ میں ایک انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر یادو نے کہا کہ سماج وادیوں کے کہنے اور کرنے میں فرق نہیں ہے ان کا "کام بولتا ہے۔ انتخابات میں لڑائی کام کرنے والوں اور گال بجانے والوں کے درمیان ہے۔

نوٹوں کی منسوخی سے غریب، مزدور اور کسان پریشان رہے :  اکھلیش

وزیر اعلی نے کہا کہ مسٹر مودی نے سال 2014 میں لوک سبھا انتخابات کے دوران کہا تھا کہ اچھے دن آئیں گے۔ کیا لوگوں کے اپنے ہی پیسوں کو لینے کے لئے لائن میں سارے دن کھڑے رہنا ہی اچھے دن ہے۔ بی جے پی حکومت اپنے وعدوں پر کھری نہیں اتری۔ غریبوں کو 15 لاکھ روپے دینے کے نام پر بینک اکاؤنٹ کھلوا لئے۔ سارا پیسہ جمع کرا لیا گیا۔ غریبوں کے اکاؤنٹ میں 15 لاکھ نہ سہی بلکہ 15 ہزار روپے ہی ڈلوا دیتے۔ " انہوں نے کہا کہ بینک کی لائن میں لگنے سے کئی لوگو کی جان چلی گئی۔ مرنے والوں کے اہل خانہ کو ریاستی حکومت نے دو لاکھ روپے مالی مددفراہم کرانے کا کام کیا ۔ریاستی حکومت نے غریب مزدور، خواتین کے فائدے کے لئے 102،108 ایمبولینس اور پولیس کی 100 ڈائل سروس شروع کی ہے۔ پھر سے حکومت بننے پر ایک کروڑ لوگو ں کو بیوہ، معذور، اور سینئر سٹی زن پنشن ایک ہزار روپے کے حساب سے دلائی جائے گی۔ کسانوں کے حادثہ انشورنس کی رقم پانچ لاکھ سے بڑھاکر سات لاکھ روپے کر دی جائے گی۔

مسٹر یادو نے کہا کہ مزدوروں کے لئے بھی انشورنس اسکیم شروع کی جائے گی۔ غریب خواتین کو پریشر کوکر اور پرائمری اسکول کے بچوں کو غذائیت سے پر غذا کے طور پر دودھ، پھل اور گھی بھی دلانے کا بندوبست کیاجائے گا۔ اسمارٹ فون دے کر اس کے ذریعے تمام کوسرکاری اسکیموں سے مربوط کرنے کا کام کیا جائے گا۔ روزگار کے مواقع بڑھائے جائیں گے۔ ایک لاکھ پولیس اہلکاروں کی بھرتی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ پیسہ کبھی کالا نہیں ہوتا بلکہ لین دین کالا وسفید ہوتا ہے۔ باہمی تعاون سے ہی کالے دھن اور بدعنوانی پر قابو پایاجاسکتا ہے۔

مسٹر یادو نے کہا کہ سماج وادی پارٹی حکومت 55 لاکھ خواتین کو پیشن دے رہی ہے۔ بیواؤں اور معذور افراد کو بھی پنشن دے رہی ہے۔ حکومت بننے پر سب کو ایک ایک ہزار روپے پنشن دی جائے گی اور خواتین کو بس میں نصف کرایہ دینا پڑے گا۔ پرائمری اسکول کے بچوں کو کپڑے، پلیٹ اور بیگ دیئے گئے ہیں۔ بچوں کو اسکول میں ہر مہینے میں ایک بار دودھ کا پاؤڈر اور ایک لیٹر دیسی گھی دیا جائے گا۔وزیر اعلی یادو نے کہا کہ پولیس میں بھرتی کے لئے 10 ویں اور 12 ویں پاس درخواست گزار صرف سرٹیفکیٹ دکھا کر پانچ کلومیٹر دوڑ لیں گے تو انہیں نوکری دے دی جائے گی۔بے روزگار آئی ٹی آئی اور پولی ٹکنیک کئے نوجواونوں کو اسکل ڈیولپمنٹ کی تربیت دے کر رورزگار دستیاب کرایا جائے گا۔

مسٹر یادو نے کہا کہ سماج وادی پارٹی حکومت کے پانچ برسوں میں کرائے گئے کاموں کی تفصیلات عوام کے سامنے ہیں لیکن مرکز بتائے کہ اس نے ڈھائی سال میں کیا کام کیا۔ انہوں نے کہا کہ سماج وادی پارٹی کی حکومت آنے پر بندیل کھنڈ خستہ حال نہیں بلکہ سب سے خوشحال حصے کے طور پر جانا جائے گا۔ ریاست میں جاری منصوبوں میں تبدیلی کی جائے گی۔انہوں بندیل کھنڈ کے مشکل دنوں میں ریاستی حکومت کے ذریعہ کئے گئے راحتی کاموں کی یاد دلائی۔ بھوکے بندیل کھنڈ میں سماجوادی راحت پیکٹ دے کر لوگو کی مدد کی گئی، جبکہ پانی کی ٹرین بھیجنے کی بات کہہ کر مرکزی حکومت نے اس کا مذاق اڑایا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز