دھماکہ خیز مواد کیس : سماجوای پارٹی کے ممبر اسمبلی سمیت یوپی اسمبلی میں تعینات 15 افراد سے پوچھ گچھ

Jul 16, 2017 12:54 PM IST | Updated on: Jul 16, 2017 12:54 PM IST

لکھنو : اتر پردیش اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر کی سیٹ کے نیچے سے پاس طاقتور دھماکہ خیز مواد برآمد ہونے کے معاملہ میں ہفتہ کو یوپی اے ٹی ایس دن بھر جانچ کرتی رہی۔ اے ٹی ایس نے اسمبلی بلڈنگ میں تعینات حکام اور ملازمین سے پوچھ گچھ کر کے ان کے بیانات درج کئے ۔علاوہ ازیں سماج وادی پارٹی کے رکن اسمبلی منوج پانڈے سے بھی پوچھ گچھ کی گئی ۔ بتایا جارہا ہے کہ اے ٹی ایس اب ایس پی کے ایک دوسرے رکن اسمبلی انل دوہرے سے بھی پیر کو پوچھ گچھ کرے گی۔

اے ٹی ایس نے قانون ساز بلڈنگ کے احاطہ میں کمانڈو کے ساتھ چپہ چپہ کا بھی جائزہ لیا۔ آج کو اے ٹی ایس مختلف سیکورٹی ایجنسیوں کے ساتھ ماک ڈرل کررہی ہے۔ یوپی اے ٹی ایس کے آئی جی اسیم ارون نے بتایا کہ اے ٹی ایس نے دھماکہ خیز مواد کی برآمدگی کے وقت قانون ساز بلڈنگ میں موقع پر موجود رہے یا ڈیوٹی میں تعینات مختلف 15 افسران اور ملازمین سے پوچھ گچھ کر کے ان کا بیان درج کیا ہے۔

دھماکہ خیز مواد کیس : سماجوای پارٹی کے ممبر اسمبلی سمیت یوپی اسمبلی میں تعینات 15 افراد سے پوچھ گچھ

انہوں نے بتایا کہ اسمبلی کے ایک اسسٹنٹ مارشل، چار انجینئرز، دو سیکورٹی اہلکار اور ایک اے سی آپریٹر سمیت سات چوتھے زمرے کے ملازمین سے پوچھ گچھ کی گئی۔ تفتیشی ٹیم میں شامل اے ٹی ایس کے ایس ایس پی امیش کمار شریواستو اور ڈی ایس پی پربھاکر چودھری، ڈی کے پوری اور ابھے نارائن شکلا نے حکام اور ملازمین کے بیانات درج کئے۔

آئی جی اے ٹی ایس کے مطابق حکام نے ہفتہ کو اسمبلی کے احاطے میں لگے کل 23 کیمروں جن میں 12 کیمرے احاطے میں ، 6 کیمرے بھون منڈل میں، 2 کیمرے حکمراں اور اپوزیشن لیڈروں کی آمدروفت کے گیٹ پر اور ایوان کے اندر اندر نصب دوردرشن کے 3 کیمروں کی ریکارڈنگ بھی لی ۔ انہوں نے بتایا کہ وزیر اعلی کی ہدایت پر اے ٹی ایس حکام نے ہنگامی حالات سے نمٹنے کی اپنی تیاریوں کا بھی جائزہ لیا ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز