مظفر نگر سے گرفتار عبداللہ سے اے ٹی ایس کی ٹیم کررہی ہے پوچھ گچھ ، کئی سنسنی خیز انکشاف کا دعوی

Aug 09, 2017 11:01 PM IST | Updated on: Aug 09, 2017 11:01 PM IST

لکھنؤ: اترپردیش پولیس کا انسداد دہشت گردی دستہ (اے ٹی ایس) مظفرنگر سے حال ہی میں پکڑے گئے بنگلہ دیشی نوجوان عبداللہ ا لمامون سے پوچھ گچھ کر رہا ہے اور ایجنسی کے دعوی کے مطابق عبداللہ نے کئی چونکا دینے والی باتوں کا انکشاف کیا ہے۔ اے ٹی ایس کے انسپکٹر جنرل اسیم ارون نے یہاں بتایا کہ پولیس ریمانڈ پر لئے گئے عبداللہ نے آج تفتیش میں کئی چیزوں کا انکشاف کیا۔ اس نے بتایا کہ بنگلہ دیش کے کئی نوجوان تعلیم کے نام پر تریپورہ (آسام) مغربی بنگال سے غیر قانونی طور پر یہاں (ہندوستان) آ جاتے ہیں اور پھر دلال یا دوسرے لوگوں کی مدد سے یہاں کا شناختی کارڈ بنوا لیتے ہیں۔

عبداللہ نے بتایا کہ وہ خود بھی 2011 میں تریپورہ بارڈر سے یہاں اسی طرح آیا تھا اور سہارنپور میں پاسپورٹ بنوانے کے لئے اس نے 9000 روپے دئے تھے۔ انہوں نے بتایا کہ جس شخص کے ذریعے سے اس نے پاسپورٹ بنوایا تھا اے ٹی ایس اسے تلاش کر رہی ہے۔

مظفر نگر سے گرفتار عبداللہ سے اے ٹی ایس کی ٹیم کررہی ہے پوچھ گچھ ، کئی سنسنی خیز انکشاف کا دعوی

مسٹر ارون نے بتایا کہ عبداللہ المامون نے اپنا ووٹر شناختی کارڈ آسام کے گاوں ناسترائے تھانہ ابھے پوری بنگئی گاو ں ضلع سے بنوانا بتایا تھا ، جس کے لئے آسام پولیس سے رابطہ کیا گیا ہے۔ بنگ گئی گاوں ضلع کے پولیس سپرنٹنڈنٹ نے اپنے خط میں بتایا کہ تحقیقات کے بعد عبداللہ ا لمامون نام کے کسی شخص کاان کے ضلع کے گاوں ناسترائے تھانہ ابھے پوری میں رہنا نہیں پایا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ پولیس ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ ہردیش کٹھیریا کی قیادت میں عبداللہ سے پوچھ گچھ جاری ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں اے ٹی ایس نے مظفرنگر ضلع کے چرتھاول علاقے کے کٹیسرا گاؤں سے اس عبد اللہ کو گرفتار کیا تھا۔ اس دوران اس کا ساتھی فیضان فرار ہو گیا۔ اے ٹی ایس اسے تلاش کر رہی ہے۔ گرفتار عبداللہ کو کل یہاں عدالت میں پیش کیا گیا تھا۔ اے ٹی ایس نے پوچھ گچھ کے لئے عبداللہ کو ریمانڈ پر لینے کی عدالت میں عرضی دی تھی۔ اس کے بعد خصوصی عدالت نے اسے اے ٹی ایس کو پانچ دن کی ریمانڈ پر دیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز