جھانسی جاسوسی کیس : اے ڈی ایم دفتر سے روزانہ پاکستان کی جاتی تھی کال ، اسٹینو راگھویندر حراست میں

Aug 06, 2017 02:30 PM IST | Updated on: Aug 06, 2017 02:30 PM IST

جھانسی : اترپردیش اے ٹی ایس کو جھانسی کے اے ڈی ایم دفتر سے پاکستان کو آرمی موومنٹ کی جاسوسی معاملہ میں ضبط کی گئی کی ہارڈ ڈسک سے کئی پختہ ثبوت ملے ہیں۔ ٹیم نے آفس میں رکھے کمپیوٹر کو ضبط کر لیا ہے۔ علاوہ ازیں کچھ دستاویزات بھی برآمد کئے ہیں۔ اس سلسلہ میں اے ٹی ایس کی ٹیم نے اسٹینو راگھویندر کو حراست میں لیا ہے ۔ ٹیم اب رگھویندر اور اس کے خاندان کے بینک اکاؤنٹس کی جانچ کررہی ہے۔

ادھر اے ٹی ایس نے اپنی تفتیش میں پایا کہ پاکستان سے ہر روز اے ڈی ایم دفتر پر کال کی جاتی تھی۔ خیال رہے کہ آرمی کی جھانسی چھاؤنی ملک میں سب سے بڑی چھاؤنی کہی جاتی ہے۔

جھانسی جاسوسی کیس : اے ڈی ایم دفتر سے روزانہ پاکستان کی جاتی تھی کال ، اسٹینو راگھویندر حراست میں

jhansi adm office file photo

آئی جی اے ٹی ایس اسیم ارون کے مطابق کافی دنوں سے خبر یں مل رہی تھیں  کہ اے ڈی ایم کے دفتر سے پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کو فوج سے وابستہ انٹیلی جنس معلومات لیک کی جا رہی ہیں ۔ اسٹینو راگھویندر اسی ڈیسک پر تعینات تھا، جہاں سے یہ معلومات لیک ہو رہی تھیں ، اس لئے اس کو حراست میں لیا گیا اور پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز