یوپی بورڈ کا سال رواں گیارہویں اور بارہویں کی اردو کتابیں نہ چھاپنے کا فیصلہ ، طلبہ کو دی یہ نصیحت

اترپریش بورڈ کے نصاب میں شامل گیارہویں اور بارہویں کلاس میں پڑھائی جانے والی اردو کی کتابوں کو اس سال نہ چھاپنے کا فیصلہ کیا ہے ۔

Sep 21, 2017 11:36 PM IST | Updated on: Sep 21, 2017 11:36 PM IST

الہ آباد : اترپریش بورڈ کے نصاب میں شامل گیارہویں اور بارہویں کلاس میں پڑھائی جانے والی اردو کی کتابوں کو اس سال نہ چھاپنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ یو پی بورڈ نے اردو کے طلبہ سے کہا ہے کہ وہ پرانی کتابوں سے اپنی پڑھائی مکمل کریں۔ واضح رہے کہ گزشتہ تعلیمی سیشن میں اردو مضمون کے ساتھ ہائی اسکول اورانٹرمیڈیٹ میں تقریباً ڈیڑھ لاکھ طلبہ اور طالبات نے بورڈ کا امتحان دیا تھا۔

اس سلسلہ میں پی بورڈ نے ایک اعلان بھی جاری کیا ہے۔ یو پی بورڈ نے اپنےاعلان میں کہا ہے کہ گیارہویں اور بارہویں درجے میں پڑھائی جانے والی اردو کتابیں بازار میں دستیاب نہیں ہیں، جس وجہ سے پرانی کتابوں کے مطابق ہی امتحانات منعقد کرائے جائیں گے۔ اردو کتابوں کو چھاپنے کا ٹھیکہ بھی ہمیشہ بورڈ کی طرف سے ہی جاری کیا جاتا ہے ، لیکن اس مرتبہ یو پی بورڈ نے اردو کی کتابیں چھاپنے کی ذمہ داری کسی بھی ادارے کو نہیں دی ہے۔

یوپی بورڈ کا سال رواں گیارہویں اور بارہویں کی اردو کتابیں نہ چھاپنے کا فیصلہ ، طلبہ کو دی یہ نصیحت

گزشتہ تعلیمی سیشن میں اردو مضمون کے ساتھ ہائی اسکول اور انٹرمیڈیٹ میں تقریباً ڈیڑھ لاکھ طلبہ اور طالبات نے امتحان دیا تھا، لیکن اس مرتبہ اردو کی کتابیں بورڈ نےکیوں نہیں چھپوائیں ؟ اس سوال پر یو پی بورڈ کے اعلیٰ عہدے داران کھل کربولنے کیلئے تیارنہیں ہیں ۔ یو پی بورڈ کے ذمہ داران کا صرف اتنا کہنا ہے کہ کچھ ناگزیر وجوہات کی بنا پر اس مرتبہ اردو کی کتابیں نہیں چھاپی جا سکیں ۔

یو پی بورڈ نے اردو کتابوں کی عدم دستیابی کا اعلان بھی کافی تاخیر سے کیا ہے ۔ نصف سے زیادہ تعلیمی سیشن گزر جانے کے بعد اردو کتابیں فراہم نہ کرنے کا اعلان یو پی بورڈ نے کیا ہے ۔ ظاہر ہے اب پرانے نصاب کے مطابق نئے سرے سے پڑھائی شروع کرنے اوراس کے مطا بق امتحان کی تیاری کرنے میں طلبہ اور طالبات کو کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑے گا ۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز