اترپردیش : وزیر اعلی یوگی کی تنظیم ہندو یواواہنی کا چرچ میں ہنگامہ ، دعائیہ پروگرام کو زبردستی رکوایا

Apr 08, 2017 02:38 PM IST | Updated on: Apr 08, 2017 02:44 PM IST

مہاراج گنج : اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی تنظیم ہندو یوا واہنی کے کارکنوں نے مہاراج گنج ضلع میں ایک چرچ میں جم کر ہنگامہ کیا اور وہاں جاری دعا ئیہ پروگرام رکوا دیا۔ تنظیم کا الزام ہے کہ یہاں کچھ غیر ملکی شہریوں کی طرف سے مقامی لوگوں کا زبردستی مذہب تبدیل کروایا جا رہا تھا۔ تاہم چرچ نے ان الزامات کو غلط قرار دیا ہے۔  موقع پر پہنچی پولیس نے معاملہ کی جانچ شروع کر دی ہے۔پولیس انسپکٹر پی کمار نے بتایا کہ چرچ میں تبدیلی مذہب کا کوئی پروگرام نہیں ہورہا تھا بلکہ وہاں پر صرف دعائیہ جلسہ ہورہا تھا۔

مہاراج گنج ضلع یوگی کے گڑھ گورکھپور سے متصل ہے اور ہندو یوا واہنی اس پورے علاقہ میں کافی متحرک ہے۔ اطلاعات کے مطابق چرچ میں جاری دعائیہ پروگرام میں کچھ امریکی سیاح بھی موجود تھے ، جن کی تعداد 9 سے 11 کے درمیان بتائی جا رہی ہے۔ ان کے علاوہ چرچ میں 150 کے ارد گرد مقامی لوگ بھی موجود تھے۔ اس دوران ہندو یوا واہنی کے کارکنان وہاں پہنچ گئے اور زبردستی تبدیلی مذہب کا الزام لگاتے ہوئے خوب ہنگامہ کیا۔ ہنگامہ کے سبب پروگرام کو درمیان میں ہی روک دیا گیا۔

اترپردیش : وزیر اعلی یوگی کی تنظیم ہندو یواواہنی کا چرچ میں ہنگامہ ، دعائیہ پروگرام کو زبردستی رکوایا

ہنگامے کے بعد موقع پر پہنچی پولیس نے معاملہ کی جانچ شروع کر دی ہے۔ ہندو یوا واہنی نے اس سلسلہ میں شکایت بھی درج کرائی ہے۔ پولیس نے چرچ میں موجود مقامی لوگوں اور امریکی شہریوں سے بھی بات چیت کی۔ فی الحال سب کو چھوڑ دیا گیا ہے۔ چرچ کے آپریٹر کا کہنا ہے کہ یہاں صرف دعائیہ پروگرام ہو رہا تھا، کوئی تبدیلی مذہب نہیں کروایا جا رہا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز