حکومت اور گوشت تاجروں کے بیچ بات چیت کے باوجود بھی گوشت کاروباریوں کی ہڑتال جاری

Apr 04, 2017 07:35 PM IST | Updated on: Apr 04, 2017 07:35 PM IST

علی گڑھ ۔ اترپردیش میں یوگی حکومت کے ذریعہ مذبحوں کے خلاف شروع کی گئی مہم کا خوف کاروباریوں پر ابھی تک جاری ہے ۔ اترپردیش میں حکومت اور گوشت تاجروں کے درمیان ہوئی بات چیت کے باوجود بھی گوشت تاجروں کی دوکانوں کی ہڑتال ابھی ختم نہیں ہوسکی ہے۔ وجہ ہے عدم تحفظ جس کی وجہ سے دوکاندار دوکانیں کھولنے کی ہمت نہیں جٹا پا رہے ہیں ۔ علی گڑھ میں محمد علی روڈ واقع گوشت والی گلی ہو یا دودھپور واقع گوشت کی مارکیٹ سبھی جگہوں پردوکانوں میں ایک ہفتہ سے تالے لٹکے ہوئے ہیں۔ جب اس بابت دوکانداروں سے بات کی گئی تو انھوں نے اپنی پریشانیوں کو ای ٹی وسے واضح کیا اور کہا کہ عدم تحفظ کے سبب ہم کام نہیں کرپارہے ہیں ۔ نگر نگم کا مذبح خانہ تیار نہیں ہے ۔ پرائیوٹ میں ہم ذبح کر نہیں سکتے ، جیسے پہلے ہم لوگ اپنی اپنی جگہوں پر ذبح کیا کرتے تھے اسے حکومت نہیں ہونے دے رہی ہے ۔ ایسے میں جانور کو ذبح کہاں کیا جائے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ وہیں ذبح کرکے دوکانوں تک گوشت کو لے جانے کا راستہ بھی 5 سے 8 کلو میٹر تک کا ہے ایسے میں راستہ میں پولس یا شرپسند عناصر روک کر مارپٹائی کرتے ہیں اور گوشت کو چھین لے جاتے ہیں ایسے میں ہم کام کیسے کرسکتے ہیں۔

حکومت اور گوشت تاجروں کے بیچ بات چیت کے باوجود بھی گوشت کاروباریوں کی ہڑتال جاری

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز