اترپردیش کے مدرسوں میں بتائے جائیں گے طلاق دینے کے درست طریقے

Aug 29, 2017 05:44 PM IST | Updated on: Aug 29, 2017 05:44 PM IST

لکھنئو۔ سپریم کورٹ کے ذریعہ ایک ساتھ تین طلاق کو غیر آئینی قرار دینے کے بعد اب یوپی کے مدارس میں تین طلاق دینے کے صحیح طریقہ کو سکھایا جائے گا اور شرعی قوانین کے تئیں لوگوں میں بیداری پیدا کی جائے گی۔ نو بھارت ٹائمس ڈاٹ کام کی ایک خبر کے مطابق، سنی بریلوی فرقہ کی با اثر تنظیم جماعت رضائے مصطفیٰ کے قومی جنرل سکریٹری مولانا شہاب الدین رضوی نے کہا کہ تین طلاق پر سپریم کورٹ کے حکمنامہ کے بعد ہم نے اپنے مدارس سے وابستہ مولویوں کی ایک میٹنگ بلائی اور ان سے طلبہ کو اس بارے میں بتانے کے لئے کہا۔ طلبہ کو پڑھانے سے سماج کو بھی اس سے جانکاری ملے گی۔ اس کے علاوہ جمعہ کے خطبوں اور دیگر مذہبی پروگراموں میں بھی اس کے تئیں لوگوں کے اندر بیداری لائی جائے گی۔

مولانا شہاب الدین نے کہا کہ اس کا مقصد یہ ہے کہ ایک ساتھ تین طلاق کے معاملہ میں لوگ شریعت کی روشنی میں عمل کر سکیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم مسلم خواتین سے بھی یہ اپیل کریں گے کہ وہ نجی معاملوں کو تھانوں یا عدالتوں میں نہ لے جائیں۔ ادھر، آگرہ میں بھی کچھ اسی طرح کی تیاری چل رہی ہے۔ آگرہ میں ایک مدرسہ چلانے والے مفتی مدثر خان نے بتایا کہ تین طلاق کے سلسلہ میں ہم طلبہ کے اندر بیداری پیدا کریں گے۔

اترپردیش کے مدرسوں میں بتائے جائیں گے طلاق دینے کے درست طریقے

مسلم خواتین: علامتی تصویر

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز