Live Results Assembly Elections 2018

بلند شہرتشدد: یوگیش نے گئوکشی کی جو کہانی سنائی، وہ سراسرجھوٹ پرمبنی ہے: آئی جی کرائم کا دعویٰ

جائے واردات سے جوگوشت اورہڈیاں برآمد کی گئی ہیں، وہ گائے کی ہیں یانہیں، ابھی یہ واضح نہیں ہوسکا ہے۔ ساتھ ہی ابتدائی جانچ میں پتہ چلا ہے کہ 48 گھنٹے پہلے کے ہیں۔

Dec 06, 2018 03:55 PM IST | Updated on: Dec 06, 2018 05:10 PM IST

بلند شہرمیں گزشتہ پیرکوہوئے تشدد کے پیچھے بجرنگ دل اورکئی دیگرتنظیموں نے گئوکشی کا الزام لگایا ہے۔ اس تشدد میں مارے گئے یوپی پولیس کے انسپکٹرسبودھ کمارسنگھ کے قتل معاملے میں اہم ملزم یوگیش راج نے بھی ایک ایف آئی آردرج کرائی ہے، جس میں تین دسمبرکی صبح گئوکشی ہوتے ہوئے دیکھے جانے کا دعویٰ کیا ہے۔

حالانکہ اترپردیش یولیس کے آئی جی کرائم ایس کے بھگت نے اس کہانی پرسوال کھڑے کردیئے ہیں۔  بھگت نے کہا ہے کہ جائے حادثہ سے جوگوشت اورہڈیوں کے ٹکڑے برآمد کئے گئے ہیں، وہ گائے کے ہیں یا نہیں، ابھی کچھ نہیں کہا جاسکتا۔ ساتھ ہی ابتدائی جانچ میں 48 گھنٹے پرانے معلوم ہوتے ہیں۔

بلند شہرتشدد: یوگیش نے گئوکشی کی جو کہانی سنائی، وہ سراسرجھوٹ پرمبنی ہے: آئی جی کرائم کا دعویٰ

بجرنگ دل لیڈر یوگیش راج: فائل فوٹو

Loading...

کیا کہہ رہا ہے یوگیش؟

پولیس نے یوگیش راج کی شکایت پرپیرکو گئوکشی کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔ یوگیش راج نے پیرکوسیانا پولیس کوتحریردے کربتایا تھا کہ وہ اپنے کچھ ساتھیوں کے ساتھ پیرصبح تقریباً 9 بجے گاوں مہاو کے جنگلوں میں گھوم رہا تھا۔ اسی دوران اس نے نیا بانس کے ملزم سدیف چودھری، الیاس، شرافت، پرویز، (دونابالغ) اورشرف الدین کو گئوکشی کرتے ہوئے دیکھا، اس کے بعد انہوں نے شورمچا دیا اورملزم بھاگ نکلے۔

آئی جی نے اٹھائے سوال

اترپردیش کے آئی جی کرائم ایس کے بھگت نے یوگیش راج کی ایف آئی آرمیں درج کہانی پرسوال کھڑا کردیا ہے۔ بھگت نے بدھ دیرشام نامہ نگاروں سے بات چیت میں کہا کہ اطلاع کے مطابق جائے حادثہ سے جو گوشت اورہڈیوں کے ٹکڑے برآمد کئے گئے ہیں، وہ ابتدائی جانچ میں 48 گھنٹے پرانے معلوم ہوتے ہیں۔ اس کے علاوہ فی الحال اس کے گائے کے گوشت ہونے کی بھی تصدیق نہیں ہوئی ہے۔ اس کا مطلب یہ ہوا کہ اگرکوئی جانورکاٹا بھی گیا ہے تو وہ یکم دسمبرکے شام کا واقعہ ہے جبکہ یوگیش کا دعویٰ ہے کہ اس نے تین دسمبرکی صبح 9 بجے گئوکشی ہوتے ہوئے دیکھنے کا دعویٰ کیا تھا۔

ایف آئی آرپرکئی اورسوال بھی اٹھے

واضح رہے کہ گئوکشی کے الزام میں  جن 7 ملزمین کے نام ایف آئی آرمیں ہیں، ان میں سے دونابالغ بچے ہیں، جن کی عمر11 اور12 سال بتائی جارہی ہے۔ ایک نابالغ بچے کے والد کا کہنا ہے کہ ان کو پولیس تھانے لے گئی ہے اورپریشان کررہی ہے۔ دوسرا ملزم بچہ بھی اسی شخص کا بھتیجہ بتایا جارہا ہے۔ ملزم بچوں کے والد نے دونوں کے آدھارکارڈ بھی دکھائے ہیں۔ حالانکہ اس معاملے میں سیانا پولیس کچھ بھی کہنے سے بچ رہی ہے۔

Bulandshahar-FIR

اس کے علاوہ معاملے کولے کرایک دیگرملزم شرافت کو لے کرتفتیش کرنے پرسامنے آیا ہے کہ انہوں نے 10 سال پہلے ہی گاوں چھوڑدیا تھا۔ شرافت اب فریدآباد میں رہتے ہیں اورکئی سال سے گاوں ہی نہیں آئے ہیں۔ ایف آئی آرمیں لکھا گیا ہے کہ ساتوں لوگ نیا باس گاوں کے ہی باشندہ ہیں۔ حالانکہ گاوں والوں کا کہنا ہے کہ ان میں سے کئی لوگ یا توبہت پہلے گاوں چھوڑکرچلے گئے ہیں یا پھراس معاملے سے ان کا کوئی لینا دینا نہیں ہے۔

یوپی ڈی جی پی نے بھی اٹھایا سوال

اترپردیش کے ڈی جی پی اوپی سنگھ نے بھی بدھ کواس پورے معاملے پرسوال اٹھایا ہے کہ بلند شہرتشدد ایک بڑی سازش تھی، وہاں جوہوا وہ صرف لااینڈ آرڈرکا معاملہ نہیں تھا، بلکہ سازش تھی۔ وہاں پرگائیں کیسے پہنچیں؟ انہیں کون اورکیوں لایا تھا؟ کن حالات میں وہ پائی گئیں؟ کئی سارے سوال اس حادثہ کولے کراٹھ رہے ہیں۔ اس حادثہ کو6 دسمبرسے پہلے انجام دیا گیا اوراس سے سازش کی بوآرہی ہے۔

آپ کوبتادیں کہ تین دسمبرکوگئوکشی کی ایک افواہ کے بعد سینکڑوں لوگ سڑک پرآگئے اوراحتجاج کرنے لگے۔ یوگیش راج بھیڑکی قیادت کررہا تھا۔ سیانا کوتوالی کے انچارج سبودھ کمارسنگھ نے اسے سمجھانے کی کوشش کی، لیکن وہ نہیں مانا۔ اس کے بعد پولیس نے بھیڑ کوہٹانے کے لئے طاقت کا استعمال کیا۔ اس پربھیڑمتشدد ہوگئی اوراسی دوران کسی نے گولی مارکرسبودھ کمارکا قتل کردیا۔  یوگیش راج پہلے ایک پرائیویٹ نوکری کرتا تھا۔  2016 میں یوگیش بجرنگ دل کا ضلع کنوینربنا۔ اس کے بعد نوکری چھوڑکرپوری طرح تنظیم کے لئے کام کرنے لگا۔ پولیس نے اس کے خلاف آئی پی سی کی دفعہ 394, 436, 427, 353, 333, 302, 307, 149, 148, 147 کے تحت مقدمہ درج کیا ہے۔

انکت فرانسس کی رپورٹ

 یہ بھی پڑھیں:   بلند شہرتشدد: مسلمانوں کے ساتھ مل کرہندووں کے خلاف کام کررہا تھا انسپکٹرسبودھ: ملزم بی جے پی یوا مورچہ لیڈرشکھراگروال کا الزام

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز