اترپردیش کے غازی پورمیں شیعہ وقف بورڈ کے کروڑوں کی املاک پرناجائز قبضہ

سنی اور شیعہ وقف بورڈوں کے پاس اربوں روپیے کی جائیداد ہیں ، جن پر ناجائز قبضے ہیں اور ان کا فائدہ دبنگ، مافیا اور سیاست میں اپنی رسائی رکھنے والے افراد اٹھا رہے ہیں۔

Jan 20, 2017 11:41 AM IST | Updated on: Jan 20, 2017 11:41 AM IST

لکھنؤ :سنی اور شیعہ وقف بورڈوں کے پاس اربوں روپیے کی جائیداد ہیں ، جن پر ناجائز قبضے ہیں اور ان کا فائدہ دبنگ، مافیا اور سیاست میں اپنی رسائی رکھنے والے افراد اٹھا رہے ہیں۔ اب یو پی میں الیکشن ہے ، تو جہاں تمام طرح کے معاملات اٹھ رہے ہیں، وہیں وقف جائیدادوں پر ناجائز قبضہ کے معاملات بھی سامنے آرہے ہیں۔

ریاست کی دارالسلطنت لکھنؤ ہویا مشرقی یوپی کا شہر غازی پور۔ ہر جگہ ناجائز قبضوں کی نشاندہی کے باوجود وقف بورڈ اورمقامی انتظامیہ بے بس ہے۔

اترپردیش کے غازی پورمیں شیعہ وقف بورڈ کے کروڑوں کی املاک پرناجائز قبضہ

اب اترپردیش کےغازی پورمیں شیعہ وقف بورڈ کی کروڑوں کی مالیت پرناجائز قبضے کی بات اجاگر ہوئی ہے۔ اترپردیش شیعہ سینٹرل وقف بورڈکے مطابق تقریباً 18 جائیدادوں پرناجائز قبضےہیں اور ان قبضوں سے متعلق ضلع انتظامیہ کا رویہ مشکوک ہے۔

وقف بورڈ کے چیئرمین سید وسیم رضوی نے ای ٹی وی کو بتایا کہ ناجائز قبضہ سے غازی پور ضلع انتظامیہ کو واقف کرایا جاچکا ہے ، مگراب تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے۔ وسیم رضوی نے اب ریاست کے چیف سکریٹری سے شکایت کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز