جموں وکشمیر کے پہلے ٹاپرشاہ فیصل کررہے تھے پریس کانفرنس، موبائل ہی غائب ہوگیا

دودن قبل ہی شاہ فیصل نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دیا تھا۔ انہوں نے لوک سبھا انتخابات میں حصہ لینے کا اعلان کیا، لیکن کس پارٹی میں شامل ہوں گے، ابھی اس سے پردہ نہیں اٹھایا ہے۔

Jan 11, 2019 05:53 PM IST | Updated on: Jan 11, 2019 05:54 PM IST

جموں وکشمیرکے پہلے آئی اے ایس ٹاپرشاہ فیصل نے اپنےعہدے سے دوروزقبل ہی استعفیٰ دے دیا تھا۔ جمعہ کووہ ایک پریس کانفرنس میں پہنچے تھے۔ یہاں وہ اپنے مستقبل کا لائحہ عمل بتانے کے لئے پہنچے تھے، لیکن اسی درمیان ان کے ساتھ ایک عجیب وغریب حادثہ ہوگیا۔

شاہ فیصل پریس کانفرنس کررہے تھے اورکوئی ان کا موبائل فون لےکرچلا گیا۔ پریس کانفرنس کے بعد شاہ فیصل چاروں طرف موبائل تلاش کرتے رہے، لیکن انہیں کچھ بھی پتہ نہیں چلا کہ ان کا موبائل کون لےگیا۔ شاہ فیصل نےآئندہ لوک سبھا الیکشن کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ الیکشن لڑنا چاہیں گے، لیکن کس پارٹی میں وہ شامل ہوں گے، اس کو لےکرانہوں نے فی الحال کچھ بھی نہیں کہا۔

جموں وکشمیر کے پہلے ٹاپرشاہ فیصل کررہے تھے پریس کانفرنس، موبائل ہی غائب ہوگیا

شاہ فیصل: فائل فوٹو

Loading...

واضح رہے کہ دودن قبل ہی شاہ فیصل نے اپنےعہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔ اس کے بعد سے قیاس آرائیاں کی جارہی تھیں کہ وہ نیشنل کانفرنس میں شامل ہوسکتے ہیں۔ حالانکہ ان کے استعفیٰ سے لوگوں نے حیرانی کا بھی اظہارکیا تھا اورسوشل میڈیا پراس کی تنقید بھی کی جارہی تھی۔ تاہم انہوں نے آج سیاست میں آنے کا باضابطہ اعلان کردیا ہے اوراب جلد ہی کسی پارٹی میں شمولیت اختیارکرسکتے ہیں۔

اس سے قبل کشمیری آئی اے ایس ٹاپرشاہ فیصل نےکہا تھا کہ لوگوں خاص کرنوجوانوں کی مرضی کے مطابق ہی میں اپنے مستقبل کا تعین کروں گا ۔ مستعفی ہونے پرسوشل میڈیا کے ذریعے لوگوں کے ردعمل پراظہارخیال کرتے ہوئے شاہ فیصل نےکہا تھا کہ سرکاری نوکری سے مستعفی ہونےکےاعلان کے بعد میں دشنام وچاپلوسی کے سیلاب میں غرق ہوگیا۔ انہوں نے کہا کہ ہزاروں لوگوں نے میرے استعفیٰ پرہزاروں نقطہ ہائے نظرسےاپنا ردعمل ظاہرکیا۔

Loading...