آری بی آئی گورنر ارجت پٹیل نے بتایا ہندوستانی کمپنیوں کی زبردست کامیابی کا راز

Feb 17, 2017 12:35 PM IST | Updated on: Feb 17, 2017 12:35 PM IST

ریزرو بینک آف انڈیا کے گورنر ارجت پٹیل نے کہا ہے کہ حکومت جلد ہی بڑھتی مہنگائی پر قابو پا لے گی، اس کے لئے کئی اقدامات کئے گئے ہیں اور آئندہ چند دنوں میں مہنگائی کی شرح چار فیصد تک ضرور آ جائے گی۔

نیٹ ورک 18 کے گروپ ایڈیٹر راہل جوشی کے ساتھ خصوصی بات چیت میں ارجت پٹیل نے کہا کہ ہندوستانی کمپنیاں بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کر رہی ہیں، یہ کمپنیاں خطرہ مول لینے میں نہیں هچكتي ہیں اور توسیع کے لئے انتہائی پرجوش ہیں۔

آری بی آئی گورنر ارجت پٹیل نے بتایا ہندوستانی کمپنیوں کی زبردست کامیابی کا راز

آر بی آئی کے گورنر کے عہدے کا چارج سنبھالنے کے بعد ارجت پٹیل نے پہلی مرتبہ کسی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیا ہے۔ اس انٹرویو کو آپ جمعہ صبح 8 بجے اور 11 بجے اور رات 8.30 بجے اور 10 بجے سی این بی سی ٹی وی -18 نیوز چینل پر دیکھ سکتے ہیں۔

امریکی پالیسی میں تبدیلی پر گہری نظر

ہندوستانی معیشت کے تناظر میں ارجت پٹیل نے کہا کہ ہم لوگ اپنی پالیسی میں تبدیلی نہیں کریں گے۔ ہندوستانی معیشت میں کھلاپن ہے۔ امریکی پالیسی میں ممکنہ تبدیلی پر ہماری گہری نظر ہے۔

عالمی معیشت میں کموڈیٹی کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کا ہندوستانی معیشت پر اثر فطری ہے، ہمیں امید ہے کہ 2016 کے مقابلہ میں 2017 میں دنیا کی معیشت میں بہتر تبدیلی آئے گی۔

انٹرویو میں آر بی آئی گورنر نے کہا کہ لینڈ اور لیبر ریفارمس سے ہمیں اعلی ترقی کی شرح کو حاصل کرنے میں مدد ملے گی، ایسے میں ہمیں 7.5 فیصد شرح ترقی حاصل کرنے میں کوئی دقت نہیں آئے گی۔

حالیہ دنوں میں آر بی آئی پر تنقید پر ارجت پٹیل نے کہا کہ ہم کسی بھی تنقید کا کھلے دل سے استقبال کرتے ہیں، گزشتہ چند دنوں میں بینکوں نے زبردست طریقہ سے اپنے کام کو انجام دیا ہے،نوٹ بندی کو جس طریقے سے سطح پر نافذ کیا گیا، وہ زبردست تھا۔

نوٹ بندی کے فیصلہ پر انہوں نے کہا کہ نوٹ بندی ہماری پالیسی کا منصوبہ ہے۔ نوٹ بندی سے ہونے والی پریشانیوں کو دور کرنے کے لئے نوٹوں کو ہم نے پہلے ہی چھاپنے شروع کر دیے تھے۔

مہنگائی کم کرنے کا طریقہ

مہنگائی کو کم کرنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ ہم ترقی کی شرح کو مسلسل مستحکم رکھیں۔ حکومت اور بینک نے اس سمت میں کئی اقدامات کئے ہیں ، جس کا اثر جلد ہی نظر آنے لگے گا۔

امریکی پالیسی میں تبدیلی سے عالمی معیشت میں بھی تبدیلی تقریبا طے ہے۔ اب امریکی تجارتی پالیسی میں کھلاپن آیا ہے۔ ٹرمپ کی تاجپوشی کے بعد نئی مانیٹری پالیسی آئی ہے۔ اس کا کچھ ممالک پر منفی اثر بھی ہوا ہے۔ ایشیائی ممالک پر اس کا بھی اس کا اثر پڑنا طے ہے، کیونکہ دو تہائی امریکی تجارت انہیں ممالک سے ہوتی ہے۔

امریکی سیکورٹی پالیسی نے ضرور ورلڈ مارکیٹ کو متاثر کیا ہے، مجھے نہیں لگتا ہے کہ کوئی بھی اس سے محفوظ رہے گا، ویسے ہندوستانی معیشت پر اس کا کوئی منفی اثر نہیں پڑے گا۔

امریکی مرکزی بینک فیڈرل ریزرو (فیڈ) کی سخت مانیٹری پالیسی پر پٹیل نے کہا کہ اس کا اثر ضرور ہوگا، لیکن یہ گزشتہ سال کے دسمبر جیسا نہیں ہو گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز