اتکل ایکسپریس حادثہ : چیف ٹریک انجینئرز سمیت چار معطل، جی ایم اور ڈی آر ایم کو بھی چھٹی پر بھیجا گیا

Aug 20, 2017 09:36 PM IST | Updated on: Aug 20, 2017 09:36 PM IST

میرٹھ : اتر پردیش میں مظفر نگر کےکھتولی میں ہوئے ٹرین حادثہ کے سلسلہ میں ریلوے نے حکام کے خلاف بڑی کارروائی کی ہے۔ شمالی ریلوے کے چیف ریلوے انجینئر کا تبادلہ کردیا گیا ہے۔اس سلسلہ میں ریلوے نے چار حکام کو بھی معطل کردیا ہے۔ علاوہ ازیں شمالی ریلوے کے جی ایم، دہلی کے ڈی آر ایم اور ریلوے بورڈ کے ممبر انجینئرنگ کو بھی چھٹی پر بھیج دیا ہے۔ ریلوے ٹریک کی نگرانی کی ٹیم کو بھی قصووار پایا گیاہے۔

ابتدائی جانچ میں اشارہ ملا ہے کہ ٹریک نگرانی کی ٹیم نے لاپروائی برتی تھی ۔ یہ محکمہ ریگولر چلنے والی ٹرینوں کے روٹ پر نظر رکھتا ہے۔ جائے حادثہ پر پہنچی ٹیم نے بتایا ہے کہ مرمت کا کام چل رہا تھا، جس کیلئے پٹری کو بلیڈ سے کاٹا گیا تھا، جس کی وجہ سے نٹ بولٹ اور فش پلیٹ کو ٹریک سے ہٹا دیا گیا تھا۔ ٹرین 5.45 پر گزری ہے اور حادثہ 5.47 پر ہوا۔ پانچ ڈبے جائے حادثہ سے نکل گئے تھے ، مگر 13 ویں ڈبے کے پلٹ جانے سے حادثہ ہوگیا۔

اتکل ایکسپریس حادثہ : چیف ٹریک انجینئرز سمیت چار معطل، جی ایم اور ڈی آر ایم کو بھی چھٹی پر بھیجا گیا

اے ڈی جی لاء اینڈ آرڈر آنند کمار نے بتایا تھا کہ بادی النظر میں اے ٹی ایس کو اس واقعہ کے پیچھے کسی طرح کی کوئی دہشت گرد انہ سازش کو کوئی ثبوت نہیں ملا ہے۔غور طلب ہے کہ ہفتے کی شام اتر پردیش کے میرٹھ-سہارنپور ڈویژن میں اڑیسہ سے اتراکھنڈ کے ہری دوار جا رہی اتكل ایکسپریس ٹرین کے 14 ڈبے میرٹھ-سہارنپور کے درمیان پٹری سے اتر گئے تھے۔ اس حادثے میں 22 افراد جاں بحق اور 203 افراد زخمی ہوگئے۔ وہ جو مختلف اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز