اتراکھنڈ مدرسہ بورڈ : مالی بحران کا شکار ، منصوبہ بنانے کے بعد پیسہ کی کمی سے کرنا پڑتا ہے منسوخ

Jan 17, 2018 11:04 PM IST | Updated on: Jan 17, 2018 11:04 PM IST

دہرہ دون : اتراکھنڈ مدرسہ بورڈ عارضی طور پر اور معاہدے کے ملازمین کے ذریعہ کام کر رہا ہے کیونکہ ضرورت کے مطابق اس بورڈ کا بجٹ بہت کم ہے ۔ لہذا بورڈ کو تمام دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ جب کبھی کوئی بڑی میٹنگ ہو یا کوئی اور خرچہ، مدرسہ بورڈ کو ایک ایک پیسہ کافی سوچ سمجھ کر خرچ کرنا پڑتا ہے ۔ کبھی کبھی تو کچھ منصوبے بنانےکےبعد بھی محض پیسہ کی کمی کی وجہ سے منسوخ کرنے پڑتا ہے۔

کہنے کو اتراکھنڈ مدرسہ بورڈ نے اپنا بہترین ایکٹ تیار کیا ہے ۔ بورڈ میں شامل ہونے والے ماہرین میں جامیہ ملیہ اسلامیہ اور اے ایم یو کے تجربہ کار ممبران شامل ہیں ، لیکن اگر ان سب سےالگ بات کریں تو بورڈ کو ضروری اخراجات کے لئے کئی سالوں سے بہت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔

اتراکھنڈ مدرسہ بورڈ : مالی بحران کا شکار ، منصوبہ بنانے کے بعد پیسہ کی کمی سے کرنا پڑتا ہے منسوخ

ایک طرف جہاں اتراکھنڈ اقلیتی ویلفیئر ڈپارٹمنٹ کا بجٹ محض 80 کروڑ روپے ہے وہیں مدرسہ بورڈ کے حصہ میں تقریبا 54 لاکھ روپے ہی آتے ہیں، جس میں بورڈ اپنی تمام کام کسی طرح پورے کرتا ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز