اترپردیش میں وزراء کے قلمدان تقسیم ، یوگی نے داخلہ سمیت تقریبا 40 محکمے رکھے اپنے پاس

Mar 22, 2017 08:22 PM IST | Updated on: Mar 22, 2017 08:49 PM IST

لکھنؤ: اترپردیش کے وزیر اعلی آدتیہ ناتھ یوگی نے وزراء میں آج قلم دان تقسیم کر دئے ۔ وزیر اعلی نے داخلہ اور ہاؤسنگ سمیت تقریبا 40 محکمے اپنے پاس رکھے ہیں۔ گورنر رام نائک نے وزیر اعلی کے دونو ں نائب وزرائے اعلی سمیت تمام 22 کابینہ وزیر، نو وزیر مملکت (آزادانہ چارج) اور 13 وزرائے مملکت کو محکمہ تقسیم کرنے کی تجویز کو منظوری دیدی ۔ وزیر اعلی نے داخلہ، ہاؤسنگ اور شہری پلاننگ، محصولات وغیرہ 40 محکمے اپنے پاس رکھے ہیں۔

نائب وزیر اعلی کیشو پرساد موریہ کو تعمیرات عامہ ، فوڈ پروسیسنگ، تفریحی ​​ ٹیکس، پبلک انٹرپرائزیز محکمے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔ نائب وزیر اعلی ڈاکٹر دنیش شرما کو سکنڈری اور اعلی تعلیم، سائنس اور ٹیکنالوجی، الیکٹرانکس، انفارمیشن ٹیکنالوجی کے محکموں کی ذمہ داری سونپی گئی ہے ۔

اترپردیش میں وزراء کے قلمدان تقسیم ، یوگی نے داخلہ سمیت تقریبا 40 محکمے رکھے اپنے پاس

وزیر اعلی نے کابینہ وزیر سوریہ پرتاپ شاہی کو زراعت، زرعی تعلیم، زرعی تحقیق، سریش کھنہ کو پارلیمانی امور، شہر ترقی، شہری مجموعی ترقی، سوامی پرساد موریہ کو لیبر اور روزگار و غریبی کے خاتمہ ، ستیش مهانا کو صنعتی ترقی، راجیش اگروال کو خزانہ، محترمہ ریتا بہوگنا جوشی کو خواتین کی فلاح و بہبود، خاندانی بہبود، ماؤں اور بچوں کی فلاح و بہبود، سیاحت، دارا سنگھ چوہان کو جنگلات و ماحولیات، چڑیا گھر، باغ بانی ، دھرمپال سنگھ کو آبپاشی، آبپاشی انجینئرنگ، ایس پی سنگھ بگھیل کو مویشی پروری ، چھوٹی آبپاشی، ماہی پروری ، ستیہ دیو پچوري کو کھادی، دیہی صنعت، ریشم، ٹیکسٹائلز، مائیکرو، چھوٹی اور درمیانہ صنعت، برآمدات کے فروغ ، رماپتی شاستری کو سماجی فلاح و بہبود، درج فہرست ذات اور قبائل کی فلاح و بہبود، جے پرکاش سنگھ کو آبکاری اور نشہ بندی ، اوم پرکاش راج بھر کو پسماندہ طبقات کی فلاح و بہبود، معذور وں کی ترقی، برجیش پاٹھک کو قانون و انصاف، متبادل توانائی ، سیاسی پنشن، لکشمی نارائن چودھری کو ڈیری کی ترقی، مذہبی امور ، ثقافت، اقلیتی امور، چیتن چوہان کو کھیل کود اور نوجوانوں کی فلاح و بہبود، پیشہ وارانہ تعلیم ، ہنرمندی کے فروغ، سری کانت شرما کو توانائی، راجندر پرتاپ سنگھ کو دیہی انجینیئرنگ سروس، سدھارتھ ناتھ سنگھ کو صحت، مکٹ بہاری ورما کو کوآپریٹیو، آشوتوش ٹنڈن کو ٹیکنیکل اور اور میڈیکل تعلیم، اور نند گوپال گپتا نندی کوا سٹیمپ ، رجسٹریشن اور شہری ہوا بازی کے شعبے دئے گئے ہیں۔

محترمہ انوپما جیسوال کو پرائمری ایجوکیش، اطفال کی فلاح و بہبود، نیوٹریشن، ریونیو فائنانس کاوزیرمملکت، سریش رانا گنا، چینی مل اور صنعتوں کو فروغ کا وزیرمملکت، اپیندر تیواری آبی وسائل،لینڈ ڈیولپمنٹ، جنگلات اورماحولیات ، کوآپریٹیو اور باغبانی کا وزیرمملکت، ڈاکٹر مہندر سنگھ کو دیہی ترقیات، مربوط دیہی ترقیات اور صحت اور طب کا وزیرمملکت، سوتنترا دیو سنگھ ، ٹرانسپورٹ، پروٹوکول اور توانائی کا وزیرمملکت، بھوپندر چودھری کو پنچایتی راج اور پبلک ورکس ڈپارٹمنٹ کا وزیرمملکت، دھرم سنگھ سینی کو آیوش، راحت اور بازآبادکاری، انل راج بھر کو آرمی ویلفےئر، فوڈ پروسیسنگ، ہوم گارڈ اور سو ل ڈیفنس، سواتی سنگھ کو غیرمقیم ہندستانیوں، سیلاب کنٹرول ،زرعی ایکسپورٹ ، خواتین فلاح و بہبود، ماں اور بچہ ویلفےئرکا وزیرمملکت بنایا گیا ہیں۔

محترمہ گلابی دیوی کو سوشل ویلفےئر، درج فہرست ذات و قبائل کی فلاح وبہبود، جے پرکاش نشاد کو جانور پالنے، ماہی پروری ، اسٹیٹ اینڈ سٹی لینڈ، محترمہ ارجنا پانڈے کو کانکنی ، آبکاری، شراب بندی، جے کمار سنگھ جیکی کو جیل، عوامی خدمت انتظامیہ، اتل گرگ کو فوڈ اینڈ سول سپلائی، کرایہ کنٹرول، صارفین تحفظ اور دیگر تین محکمہ، رگھوویندر پرتاپ سنگھ کو زراعت اور تعلیم، نیل کنٹھ تیواری کو قانون ، انفارمیشن اور اسپورٹس، محسن رضا کو سائنس و تکنالوجی، اطلاعاتی تکنالوجی، مسلم وقف اور حج، گریش یادو کو شہری ترقیات ، راحت اور بازآبادکاری، بلدیو الکھ کو اقلیتی کی فلاح و بہبود اور آبپاشی، منن کوری کو محنت اور روزگار،سندیپ سنگھ کو پرائمری، سیکنڈری ، ہائر ایجوکیش اور تکنیکی اور طبی تعلیم، سریش پاسی کو ہاوسنگ، پیشہ وارانہ تعلیم، ہنرمندی کو فروغ کے محکمہ دےئے گئے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز