اترپردیش : مرکزی وقف بورڈ کا شیعہ او رسنی وقف بورڈ کو تحلیل کرنے کا مطالبہ

Apr 19, 2017 11:24 PM IST | Updated on: Apr 19, 2017 11:25 PM IST

لکھنؤ: مرکزی وقف بورڈ نے شیعہ اور سنی وقف بورڈوں کو تحلیل کرکے نئے نظم تک ایڈمنسٹریٹر کی تقرری کرنے کی ریاستی حکومت سے اپیل کی ہے۔ بورڈکے اراکین نے حال ہی میں ریاست کے مختلف حصوں کا دورہ کیا او ردونوں بورڈو ں میں گڑبڑی ہونے کی رپورٹ دی ہے۔ بورڈ نے دونوں بورڈوں کے کام کاج میں بے ضابطگی پائے جانے پر ریاستی حکومت سے اسے تحلیل کرکے نئے بورڈ کی تشکیل کرنے کا مشورہ دیا۔

مرکزی وقف بورڈ نے اپنے حالیہ حکم میں کہا تھا کہ بورڈ کا تسلسل ریاست کے عوام کے لئے مہلک ثابت ہوسکتی ہے کیوں کہ اس میں ضابطوں کی صریح خلاف ورزی کی گئی ہے۔یہ بھی بتایا گیا ہے کہ بورڈ کے چےئرمینوں نے وقف کی جائیدادوں کی غیر قانونی منتقلی کی ہے جس سے وقف جائیدادوں کا نقصان ہوا ہے۔

اترپردیش : مرکزی وقف بورڈ کا شیعہ او رسنی وقف بورڈ کو تحلیل کرنے کا مطالبہ

ذرائع نے آج بتایا کہ گذشتہ ہفتے اقلیتی بہبود اور وقف کے چیف سکریٹری ایس پی سنگھ کو ایک خط لکھ کر کہا گیا تھا کہ وقف قانون 1995کے تحت ریاستی حکومت دفعہ 99کے تحت اپنے اختیارات کا استعمال کرکے مناسب کارروائی کرے۔ خط میں بورڈ نے کہا کہ نئے بورڈ کی تشکیل نو تک ایک ایڈمنسٹریٹر مقرر کیا جانا چاہئے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز