یوپی کے بعد اب اتراکھنڈ میں بھی مدارس بی جے پی حکومت کے نشانے پر ، 200 مدارس کی تین سطح پر جانچ

Oct 20, 2017 02:30 PM IST | Updated on: Oct 20, 2017 02:30 PM IST

دہرا دون : اترپردیش میں یوگی حکومت کے ذریعہ مدارس اسلامیہ کو پریشان کئے جانے کے بعد اب اتراکھنڈ میں بھی ترویندر سنگھ راوت کی قیادت والی بی جے پی حکومت کے نشانے پر مدارس آگئے ہیں ۔ محکمہ تعلیم ریاست کے تقریبا دو سو سے زیادہ مدارس کی جانچ میں مصروف ہو گیا ہے۔ مدارس کے اندرونی حالات کا جائزہ لینے کے لئے بنائی گئی جانچ ٹیم پرجہاں مدرسہ منتظمین سوال کھڑے کر رہے ہیں تو وہیں اپوزیشن کانگریس کو بھی ریاستی حکومت پر حملہ آور ہوگئی ہے۔

ریاست میں موجود تمام تسلیم شدہ مدارس کی محکمہ تعلیم نے تین سطح کی تحقیقات شروع کی ہے ۔ مدرسہ بورڈ کے ڈائریکٹر اور ڈی جی ایجوکیشن کیپٹن آلوک شیکھر تیواری کے مطابق محکمہ کو مدرسوں میں لاپروائی کی کافی شکایات مل رہی تھیں، جس کے بعد حکومت نے ریاست بھر کے سرکاری مالی امداد پانے والے تمام مدارس کی جانچ کرانے کا فیصلہ کیا گیا ۔

یوپی کے بعد اب اتراکھنڈ میں بھی مدارس بی جے پی حکومت کے نشانے پر ، 200 مدارس کی تین سطح پر جانچ

بتایا جاتا ہے کہ اگر مدرسہ منتظمین کے نجی كھاتوں میں خامیاں پائی گئیں تو سرکار سخت کارروائی کرنے کے موڈ میں ہے ۔ ادھر کانگریس نے اس کو لے کر بی جے پی پر حملہ شروع کردیا ہے۔ کانگریس کے ریاستی صدر پریت سنگھ نے مدارس کی جانچ کو لے کر ترویندر حکومت کی شدید تنقید کی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز