فلم پدما وتی تنازع : جمہوریت میں پرتشدد احتجاج اور دھمکی دینا ناقابل قبول : نائب صدر جمہوریہ

بالی وڈ فلم پدماوتی کے تعلق سے کھڑے ہونے تنازع کے پس منظر میں نائب صدر جمہوریہ ایم وینکیا نائیڈو نے آج زور دیکر کہا کہ پرتشدد احتجاج جمہوریت میں ناقابل قبول ہے۔

Nov 25, 2017 09:22 PM IST | Updated on: Nov 25, 2017 09:22 PM IST

نئی دہلی: بالی وڈ فلم پدماوتی کے تعلق سے کھڑے ہونے تنازع کے پس منظر میں نائب صدر جمہوریہ ایم وینکیا نائیڈو نے آج زور دیکر کہا کہ پرتشدد احتجاج جمہوریت میں ناقابل قبول ہے۔ یہاں ٹائمس لٹریری فیسٹول کی افتتاحی تقریب میں مسٹر نائیڈو نے کہا کہ ’’آپ کو جمہوری طریقے سے احتجاج کا حق حاصل ہے، مناسب حکام سے رجوع کریں۔ آپ کسی کو جسمانی تکلیف نہیں پہنچا سکتے اور تشدد کی دھمکی بھی نہیں دے سکتے۔ ہمیں قانون کی حکمرانی کو کمزور نہیں کرنا چاہئے‘‘۔

مسٹر نائیڈو نے کہا کہ بعض فلموں کے تعلق سے ایک نیا مسئلہ یہ کھڑا ہوا ہے کہ لوگ یہ سمجھنے لگتے ہیں کہ ان کے جذبات مجروح ہورہے ہیں اس طرح احتجاج شروع ہوجاتا ہے ــجس میں کچھ لوگ زیادہ آّگے بڑھ جاتے ہیں اور انعامات کا اعلان کرنے لگتے ہیں۔ خواہ معلنہ رقم ان کے پاس ہو یا نہیں۔ ہر کوئی ایک ایک کروڑ روپے کے انعام کا اعلان کررہا ہے، جس پر مجھے شبہ ہے۔کیا ایک کروڑ روپیہ رکھنا آسان ہے‘‘۔

فلم پدما وتی تنازع : جمہوریت میں پرتشدد احتجاج اور دھمکی دینا ناقابل قبول : نائب صدر جمہوریہ

نائب صدر نے کہا کہ بہرحال وہ کسی خاص فلم کا حوالہ نہیں دے رہے ہیں بلکہ عام طور پر اپنی بات رکھ رہے ہیں۔ ماضی میں گرم ہوا، قصہ کرسی کا اور آندھی سمیت کئی فلموں پر پابندیاں لگائی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ کسی احتجاج کو کسی مذہب سے جوڑنا بھی غلط ہے ’’ہمیں عام آدمی کے جذبات کا احترام کرنا چاہیے۔‘‘۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز