معاشی، سماجی اور تعلیمی پسماندگی کے پیش نظر مسلمانوں کیلئے وینچر کیپٹل فنڈ جاری کیے جانے کا امکان

Jan 19, 2017 05:57 PM IST | Updated on: Jan 19, 2017 05:57 PM IST

ممبئی : مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور و اوقاف مختار عباس نقوی نے آج کہاہے کہ مرکز ی حکومت اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کی ترقی و فلاح و بہبود کے لئے پابند ہے اور وہ اس ضمن میں وزیر اعظم رمودی سے تبادلہ خیال کریں گے اور فروری 2017کے بجٹ میں اس کا اعلان کرنے کی کوشش کی جائے گی کہ دیگر طبقات کی طرح مسلمانوں کے لئے بھی مرکزی حکومت وینچر کیپٹل فنڈ جاری کرے۔ دراصل آل انڈیا مسلم محاذ کے چیئر مین محمد فاروق اعظم کی قیادت میں ایک وفد نے مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور و اوقاف مختار عباس نقوی سے ملاقات کی اور ایک میمورنڈم پیش کرکے یہ مطالبہ کیا کہ مرکزی حکومت دیگر طبقات ،ذات اور پسماندہ ذاتوں کی طرح مسلمانوں کی معاشی، سماجی اور تعلیمی پسماندگی کو مد نظر رکھتے ہوئے مسلمانوں کے لئے بھی وینچر کیپٹل فنڈ جاری کرے۔آل انڈیا مسلم محاذ کے اس وفد میں ڈاکٹر غلام رحمانی، ڈاکٹر اظہر جنید اور فیصل اعظم شامل تھے۔

اس موقع پر محمد فاروق اعظم نے مودی حکومت مرکزی سرکار کی ستائش کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ مرکزی حکومت وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں اقلیتوں کی فلاح و بہبود کے لئے متعدد منصوبوں اور پروگراموں پر عمل پیرا ہے اور مرکزی حکومت نے اپنے بجٹ میں پسماندہ طبقوں کے لئے خصوصی وینچر کیپٹل فنڈ دیئے جانے کا اعلان کیا ہے ساتھ ہی وزیر اعظم کی جانب سے جاری کردہ جن دھن یوجنا ، مُدرہ یوجنا،اسٹارٹ اپ اور اسٹینڈ اپ انڈیااسکیموں کے ذریعے اقلیتوں کے لئے نئے فلاحی منصوبے تشکیل دیئے جا رہے ہیں جو کہ قابل تعریف ہیں مگر مسلمانوں کی پسماندگی کو دور کرنے کے لئے یہ نا کافی ثابت ہو رہے ہیں۔

معاشی، سماجی اور تعلیمی پسماندگی کے پیش نظر مسلمانوں کیلئے وینچر کیپٹل فنڈ جاری کیے جانے کا امکان

انھوں نے مرکزی وزیر مختار عباس نقوی کویقین دلانے کی کوشش کی اور مطلع کیا کہ مسلمان قدرتی طور پر خود کو زمینی سطح کے ٹیکنیکل کاموں میں ثابت کرنے کا ہنر رکھتے ہیں اور آرٹ، میکینکل،الیکٹریکل و دیگر شعبوں میں مسلمانوں کا ہمیشہ سے ہی غلبہ رہا ہے مگر باوجود ان تمام باتوں کے ملک کی آزادی کے بعد سے اب تک مسلمان معاشی، سماجی اور تعلیمی طور پر پسماندہ ہیں اور مرکز میں مودی حکومت آنے کے بعد اقلیتوں اور بالخصوص مسلمانوں کوایک امید کی کرن نظر آئی ہے کہ اب اس قوم کی پسماندگی کو دور کرنے کے لئے مودی حکومت ضرورٹھوس اقدامات کریگی ۔

انہوں نے ان باتوں کا حوالہ دیتے ہوئے مطالبہ کیاکہ مرکزی حکومت کے بجٹ 2017میں اعلان کے بعد جس طرح دیگر پسماندہ طبقات کی طرح مسلمانوں کے لئے بھی وینچر کیپٹل فنڈ جاری کرے تاکہ اس ملک میں کروڑوں کی تعداد میں آباد مسلمان اپنی معاشی، سماجی اور تعلیمی پسماندگی کو دور کرنے کے قابل ہوں۔ اس موقع پر مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور و اوقاف مختار عباس نقوی نے وفد کی باتوں کو بغورسننے کے بعدیقین دلایاکہ مرکز ی حکومت اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کی ترقی و فلاح و بہبود کے لئے پابند ہے اور وہ اس ضمن میں وزیر اعظم سے بات کریں گے کہ دیگر قوموں کی طرح مسلمانوں کے لئے بھی مرکزی حکومت وینچر کیپٹل فنڈ جاری کرے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز