اترپردیش میں نہیں تھم رہا تشدد کا ننگا ناچ ، سہارنپور اور دیوریا کے ایڈیشنل ایس پی پر گری راج

May 10, 2017 10:10 AM IST | Updated on: May 10, 2017 10:10 AM IST

لکھنو : اتر پردیش کے سہارنپور اور دیوریا ضلع میں بھڑکے تشدد پر وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے سخت موقف اپناتے ہوئے منگل کو کابینہ میٹنگ کے دوران ڈی جی پی سلكھان سنگھ اور چیف سکریٹری داخلہ دیباشيش پانڈا کو طلب کیا ، جس کے بعد سہارنپور اور دیوریا تشدد کی گاج دونوں ضلع کے ایڈیشنل ایس پی پر گری ۔

سہارنپور کے دو اور دیوریا کے ایک ایڈیشنل ایس پی کو فوری طور پرہٹا دیا گیا ۔ چرنجیوی ناتھ سنہا کو ایڈیشنل ایس پی دیوریا بنایا گیا ہے ۔ چرنجیوی ناتھ سنہا کو فوری طور پرعہدہ سنبھالنے کا حکم دیا گیا ہے ۔ وہیں پربل پرتاپ سنگھ کو ایس پی سٹی سہارنپور تو ودیا نواس مشرا کو ایس پی دیہات سہارنپور بنایا گیا ہے ۔

اترپردیش میں نہیں تھم رہا تشدد کا ننگا ناچ ، سہارنپور اور دیوریا کے ایڈیشنل ایس پی پر گری راج

خیال رہے کہ گزشتہ دنوں بغیر کپتان والے ضلع دیوریا میں تشدد بھڑک اٹھا تھا ۔ منگل کو دن بھر شرپسندوں نے جم کر ہنگامہ کیا ۔ اس دوران کئی مقامات پر آگ زنی ، فائرنگ اور پتھراؤ کے واقعہ بھی پیش آئے ۔

اس دوران شہر کے مختلف مقامات پر شرپسندوں نے جم کر ننگا ناچ کیا ، جس میں کئی پولیس اہلکاروں کی پٹائی بھی کی گئی ۔ شرپسندوں نے درجن بھر سے زیادہ گاڑیوں کو دھماکے سے اڑا دیا ، جس کے بعد پولیس نے لاٹھی چارج کر کے انہیں بھگایا ۔

تشدد پر ایس ایس پی سبھاش چندر دوبے کا کہنا ہے کہ اس کے پیچھے بھیم سینا آرمی کا ہاتھ ہے ۔ ایس ایس پی نے کہا کہ اب تک 22 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تشدد میں سی او اور انڈر ٹرینی آئی پی ایس افسر سمیت نصف درجن افراد زخمی ہوئے ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز