وسیم رضوی نے کی اسلام کے نام پر ’’پاکستانی ‘‘ جھنڈے کو بین کرنے کی مانگ

شیعہ سنٹر ل وقف بورڈ کے چیئر مین وسیم رـضوی نے عدالت عظمیٰ میں ایک عرضی داخل کی ہے۔

Apr 17, 2018 05:43 PM IST | Updated on: Apr 17, 2018 08:25 PM IST

شیعہ سنٹر ل وقف بورڈ کے چیئر مین وسیم رـضوی نے عدالت عظمیٰ میں ایک عرضی داخل کی ہے۔ اس عرضی میں انہوں نے کہا ہے کہ اسلام کے نام پر ملک میں جس جھنڈے کا استعمال کیا جاتا ہے ، وہ پاکستان کی سیاسی پارٹی ’’مسلم لیگ‘‘ کا جھنڈا ہے، اس پر پابندی عائد کی جائے ۔ انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ اسلام میں اس طرح کے جھنڈے کا کہیں ذکر یا تاریخ نہیں ہے۔ ملک میں ایسا جھنڈا لگاناآئین کے خلاف ہے۔

رٹ عرضی سے متعلق نیوز 18 سے گفتگو میں وسیم رضوی نے کہا کہ مسلم برادری جو ہرے رنگ کے جھنڈے میں چاند تارا کے ساتھ جوجھنڈے کا استعمال کرتی ہے، اس پر ہم نے کہا ہے کہ یہ کوئی اسلامک فلیگ نہیں ہے ، یہی نہیں اس طرح کے جھنڈے کا اسلام میں کہیں کو ذکر ہی نہیں ہے ۔

وسیم رضوی نے کی اسلام کے نام پر ’’پاکستانی ‘‘ جھنڈے کو بین کرنے کی مانگ

وسیم رضوی

Loading...

وسیم رضوی کہتے ہیں کہ 1906 میں مسلم لیگ کی تشکیل کے ساتھ یہ جھنڈا بنایا گیا ہے ، یہ جھنڈا مسلم لیگ کی شناخت بنا ،اور اس سے قبل اس جھنڈے کا کوئی اسلامی تاریخ نہیں ہے ۔یہ سیاسی جھنڈا بنایا گیا تھا۔ پاکستان جب الگ ہو گیا تو جناح اور دیگراسے لے کر پاکستان چلے گئے ۔ اسی سے پاکستان کا جھنڈا بنایا گیا ۔ وہیں پاکستان کی مسلم لیگ میں آج بھی اسی جھنڈے کا استعمال کیا جاتا ہے ۔اس جھنڈے کو یہاں کے شدت پسند مسلمانوں نےپاکستان کی محبت میں اس جھنڈے کو قائم رکھا اور اسے مذہبی جھنڈا بنا دیا ،وسیم رضوی کہتے ہیں کہ یہ مذہبی نہیں سیاسی جھنڈا ہے ۔

 

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز