اب شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی کا بابری مسجد کے مالکانہ حقوق کا دعوی ، دی یہ دلیل

Jul 28, 2017 09:32 PM IST | Updated on: Jul 28, 2017 09:32 PM IST

لکھنؤ : ایک جانب جہاں بابری مسجد تنازع کو لے کر پورا ملک سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار کر رہا ہے، وہیں یو پی شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی نے اس معاملے کو ایک نیا موڑ دیتے ہوئے بابری مسجد پر شیعہ برادری کی دعویداری کا اعلان کیا ہے ۔ ان کی دلیل ہے کہ بابری مسجد کو تعمیر کرانے والا میر باقی شیعہ تھا ، اسلئےاس پر شیعہ فرقے کا حق بنتا ہے اور ان کو بھی اس مقدمہ میں فریق بنایا جائے۔

شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی نے کہا ہے کہ وہ بابری مسجد کے مالکانہ حقوق کی دعویداری کے لئے عدالت سے رجوع کریں گے ۔ وہیں ظفریاب جیلانی سے اس کے متعلق پوچھے جانے پر انہوں نے بھی تسلیم کیا کہ شیعہ حضرات بھی مسجد کے متولی رہے ہیں ، لیکن ساتھ ہی کہا کہ اس بیان کی اس وقت کوئی ضرورت اور اہمیت نہیں ہے ۔ کیونکہ اس سے مقدمے پر کوئی اثر نہیں پڑے گا ۔

اب شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی کا بابری مسجد کے مالکانہ حقوق کا دعوی ، دی یہ دلیل

ظفریاب جیلانی نے کہا کہ شیعہ وقف بورڈ کو اپنے طور پرکوئی بھی پیش رفت کرنے کا اختیار ہے، لیکن اس پیش رفت سے مقدمے کی سمت ورفتار پر کوئی اثر نہیں پڑے گا ۔ تاہم اتنا ضرور ہے کہ جو سیاسی لوگ اس تاریخی تنازع سے سیاسی مفاد حاصل کرنا چاہتے ہیں ، انہیں فائدہ ضرور پہنچ سکتا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز