یشونت سنہا کا ارون جیٹلی پر نشانہ، کہا معیشت کی حالت انتہائی خراب کر دی

Sep 27, 2017 12:37 PM IST | Updated on: Sep 27, 2017 12:37 PM IST

نئی دہلی۔ سینئر بی جے پی لیڈر یشونت سنہا نے کہا ہے کہ معیشت بہت بری حالت میں ہے۔ انہوں نے جی ڈی پی کو کیلکولیٹ کرنے کے طریقوں پر بھی سوال اٹھایا۔ سابق وزیر خزانہ یشونت سنہا نے معیشت کی تصویر پیش کرتے ہوئے انگریزی اخبار 'دی انڈین ایکسپریس' میں ایک مضمون لکھا ہے۔ اس مضمون میں انہوں نے کہا کہ حکومت نے 2015 میں جی ڈی پی کو کیلکولیٹ کرنے کے طریقے میں تبدیلی کی تھی، اس طریقے سے کیلکولیٹ کرنے پر جی ڈی پی کی شرح میں 2 فیصد کا فرق آتا ہے۔ انہوں نے لکھا، "فی الحال ہماری جی ڈی پی شرح ترقی 5.7 فیصد ہے جبکہ پرانے طریقے کے حساب کے مطابق یہ صرف 3.7 فیصد یا اس سے بھی کم ہے۔

انہوں نے لکھا کہ ریڈ راج آج کل عام بات ہو گئی ہے۔ انکم ٹیکس ڈیپارٹمنٹ کے پاس کئی کیس ہیں جن سے لاکھوں افراد جڑے ہیں۔ انہوں نے لکھا، "ای ڈی اور سی بی آئی کے ہاتھ بھی خالی نہیں ہیں۔ لوگوں کے ذہنوں میں خوف پیدا کرنے کا کھیل شروع ہو گیا ہے۔

یشونت سنہا کا ارون جیٹلی پر نشانہ، کہا معیشت کی حالت انتہائی خراب کر دی

سینئر بی جے پی لیڈر اور واجپئی حکومت میں وزیر خزانہ یشونت سنہا: فائل فوٹو۔

انہوں نے لکھا، "وزیر خزانہ نے معیشت کی حالت انتہائی خراب کر دی ہے۔ اگر میں اب بھی اس بارے میں نہ بولوں تو یہ ملک کے تئیں اپنی ذمہ داری سے منہ موڑنا ہو گا۔" انہوں نے کہا کہ وہ جو بھی لکھ رہے ہیں وہ ان کے ساتھ ساتھ بی جے پی اور اس سے باہر کے کئی ایسے لوگوں کا موقف ہے جو خوف کی وجہ سے کچھ بول نہیں پا رہے ہیں۔

یشونت سنہا اٹل بہاری واجپئی کی حکومت میں وزیر خزانہ تھے۔ ان کے دور میں ہی انڈیا ملینیم بانڈس جیسا کامیاب منصوبہ شروع ہوا تھا۔ وہ نریندر مودی حکومت کی کئی پالیسیوں کی مسلسل تنقید کرتے رہے ہیں۔ ان کے بیٹے جینت سنہا پہلے وزارت خزانہ میں وزیر مملکت تھے لیکن اب انہیں ہوا بازی کی وزارت دے دی گئی ہے۔ سمجھا جاتا ہے کہ ان کے یشونت سنہا کی تنقیدوں کے چلتے ہی ان کا ٹرانسفر کیا گیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز