چوطرفہ تنقید کے بعد یوگی حکومت کی ڈیمیج کنٹرول کی کوشش ، تاج محل کو ملی سرکاری کلینڈر میں جگہ

تاج محل کو لے کر چوطرفہ تنقید کے بعد بیک فٹ پر آئی بی جے پی نے اب ڈیمیج کنٹرول کی کوششیں شروع کردی ہیں ۔

Oct 18, 2017 05:57 PM IST | Updated on: Oct 18, 2017 05:57 PM IST

لکھنو : تاج محل کو لے کر چوطرفہ تنقید کے بعد بیک فٹ پر آئی بی جے پی نے اب ڈیمیج کنٹرول کی کوششیں شروع کردی ہیں ۔ جہاں گزشتہ روز وزیر اعلی یوگی آدتیہ نے آگرہ کے دورہ کا اعلان کرکے معاملہ کو ٹھنڈا کرنے کی کوشش کی ، وہیں دوسرے دن اب سرکاری کلینڈر میں تاج محمل کی تصویروں کو جگہ دیدی گئی ہے۔

اترپردیش حکومت کے ریاستی انفارمیشن اور پبلک رلیشن محکمہ نے 17 اکتوبر کو جاری ہوئے ہیریٹیج کلینڈر 2018 میں جولائی ماہ کے پیج پر تاج محل کو جگہ دیتے ہوئے وزیر اعظم اور وزیر اعلی کی تصویر بھی لگائی ہے۔ ساتھ ہی ساتھ اس سے وابستہ منصوبوں کا بھی تذکرہ کیا ہے۔

چوطرفہ تنقید کے بعد یوگی حکومت کی ڈیمیج کنٹرول کی کوشش ، تاج محل کو ملی سرکاری کلینڈر میں جگہ

خیال رہے کہ متنازع اور اشتعال انگیز بیانات کیلئے معروف بی جے پی لیڈر سنگیت سوم کے ذریعہ تاج محل کو ملک کیلئے ایک دھبہ بتائے جانے کے بعد سے ہی بی جے پی چوطرفہ تنقید کی زد میں ہے۔ اپوزیشن پارٹیوں سمیت سوشل میڈیا پر یوگی حکومت کی جم کر فضیحت ہورہی ہے۔

Untitled-design-58-4

ذرائع کے مطابق مرکزی اعلی کمان ممبر اسمبلی سنگیت سوم کے بیان سے کافی ناراض تھا اور سوشل میڈیا پر بھی اس کی کرکری ہورہی تھی ، جس کےبعد ریاستی قیادت کو جلد از جلد ڈیمیج کنٹرول کی ہدایت دی گئی تھی ۔ اسی سلسلہ میں اب یہ قدم اٹھایا گیا ہے اور تاج محل کو سرکاری کلینڈر میں جگہ دی گئی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز