گمراہ ہوکر دہشت گردی کی راہ پر جانے والے نوجوانوں کیلئے یوگی حکومت چلائے گی واپسی پروگرام

Apr 27, 2017 05:09 PM IST | Updated on: Apr 27, 2017 05:09 PM IST

لکھنؤ: اتر پردیش میں کانپور کے سیف اللہ کی طرح گمراہ ہوکر دہشت گردی کا راستہ اختیار کرنے والے نوجوانوں کو واپس اصل دھارے میں لانے کے لیے یوگی آدتیہ ناتھ حکومت نے گھر واپسی پروگرام چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس پروگرام کو کامیاب بنانے کی ذمہ داری ریاستی پولیس کے انسداد دہشت گردی دستہ (اے ٹی ایس) کو سونپی گئی ہے۔ اے ٹی ایس کے انسپکٹر جنترل اسیم ارون نے بتایا کہ ادھر کچھ عرصے سے دیکھا جا رہا ہے کہ سوشل میڈیا یا دیگر ذرائع کے سبب کچھ نوجوان گمراہ ہوکرآئی ایس آئی ایس کے یا دیگر دہشت گرد تنظیموں کے حامی بنتے جا رہے ہیں۔

مسٹر ارون نے بتایا کہ بھٹکے ہوئے نوجوانوں کی واپسی اور دیگر نوجوانوں کو بھٹکنے سے روکنے کے لیے گھر واپسی پروگرام شروع کیا گیا ہے۔ حال ہی میں آئی ایس آئی ایس سے رابطہ رکھنے کے الزام میں کئی نوجوانوں کو گرفتار کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ گھر واپسی پروگرام ان لوگوں کے لئے کافی مددگار ثابت ہو گا، جن کے کنبہ کا کوئی رکن گمراہ ہوکر اس راستے پر چلا گیا ہوگا، اس کے لئے ہیلپ لائن نمبر 0522-2304586 اور 9792103156 پر براہ راست رابطہ کیا جا سکتا ہے۔

گمراہ ہوکر دہشت گردی کی راہ پر جانے والے نوجوانوں کیلئے یوگی حکومت چلائے گی واپسی پروگرام

اے ٹی ایس آئی جی نے بتایا کہ بھٹکے نوجوانوں کے کنبوں، دوست اور مذہبی علما کے ساتھ بات چیت کرائیں گے ،بہتری آتے ہی انہیں تربیت دیکر روزگار دستیاب کرائے جائیں گے۔انہوں نے بتایا کہ خصوصی پروگرام چلا کر اسے مکمل کیا جائے گا۔ اس کے تحت کنبہ کو ثبوت دکھائے اور سنائے جاتے ہیں۔ انہیں بتایا جاتا ہے کہ نوجوان کو خصوصی کاونسلنگ کی ضرورت ہے۔ گمراہ نوجوان سے پولیس افسران باقاعدہ ملاقات کر کے صلاح و مشورہ دیں گے۔ اسے مین اسٹریم میں شامل ہونے میں مکمل مدد دی جاتی ہے۔ اس کی کاونسلنگ کی جائے گی جس میں کنبہ کے اراکین، دوست اور مذہبی علماء کو شامل کیا جائے گا۔

آہستہ آہستہ ملاقات کم کرکے اور اس سے فون پر بات کریں گے۔ کبھی کبھی اچانک جاکر ملیں گے تاکہ پتہ چل سکے کہ نوجوان کی حالت کیا ہے اور وہ وہاں ہے یا نہیں۔ اسے مکمل طور خفیہ رکھا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ نوجوان کی شناخت بھی خفیہ رکھی جائے گی۔ اس دوران نوجوان کی نگرانی رکھی جائے گی۔ اس کی ملازمت کا انتظام اور شادی ہونے کے بعد عمل مکمل سمجھا جائے گا لیکن اس پر نظر رکھا جانا بند نہیں کیا جائے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز