نوٹ بندی کے خلاف کانگریس کا یوم سیاہ ، آر بی آئی دفتر کے بعد یوتھ ونگ کا نصف شب میں مظاہرہ

نوٹ بندی کے ایک سال مکمل ہونے پر بھارتیہ یواکانگریس ( آئی وائی سی) نے آدھی رات کو وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی حکومت کے اس فیصلہ کی مذمت کی اور اس کے خلاف ریزرو بینک آف انڈیا کے سامنے مظاہرہ کیا

Nov 08, 2017 10:21 AM IST | Updated on: Nov 08, 2017 10:21 AM IST

نئی دہلی ) نوٹ بندی کے ایک سال مکمل ہونے پر بھارتیہ یواکانگریس ( آئی وائی سی) نے آدھی رات کو وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی حکومت کے اس فیصلہ کی مذمت کی اور اس کے خلاف ریزرو بینک آف انڈیا کے سامنے مظاہرہ کیا۔

آئی وائی سی کے قومی صدر امریندر سنگھ راجہ کی قیادت میں مظاہرین نے نوٹ بندي پر حکومت سے وضاحت کا مطالبہ کرتے ہوئے سوال کیا، ’’اگر کالا دھن باہر آیا تو کالا دھن رکھنے والے کون لوگ تھے اور اس سلسلہ میں اب تک ان کے خلاف کیا کارروائی کی گئی ہے‘‘۔مسٹر راجہ نے نوٹ بندي کے فوائد پر بھی سوال اٹھائے۔

نوٹ بندی کے خلاف کانگریس کا یوم سیاہ ، آر بی آئی دفتر کے بعد یوتھ ونگ کا نصف شب میں مظاہرہ

انہوں نے کہا کہ نوٹ بندي کی سب سے زیادہ مار ملک کے غریب اور محروم طبقے پر پڑی ہے۔ نوٹ بندي کے دوران لوگوں کو 50 دن تک طویل قطار میں لگنا پڑا۔ انہوں نے آٹھ نومبر کو 'سیاہ دن' قرار دیتے ہوئے کہا کہ نوٹ بندي نے پورے ملک کے اقتصادی ڈھانچے کو ہلا ڈالا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز