تین طلاق پر بی جے پی کا غلط پروپیگنڈہ مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش: ظفریاب جیلانی

May 01, 2017 05:07 PM IST | Updated on: May 01, 2017 05:07 PM IST

بریلی۔ مسلم پرسنل لاء بورڈ نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر تین طلاق کے معاملے میں غلط پروپیگنڈہ کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ یہ مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش ہے۔ پرسنل لاء بورڈ کے سکریٹری ظفریاب جیلانی نے یہاں ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ طلاق مسلمانوں کے دو خاندانوں کے درمیان کا معاملہ ہے۔ جتناکچھ نہیں ہورہا ہے، اس سے کہیں زیادہ طلاق ثلاثہ پر غلط پروپیگنڈہ  کیا جارہا ہے۔ اسےایک مسئلہ بنا کر دین اسلام کو بدنام کیا جا رہا ہے اور اس کی آڑ میں سیاسی مفاد حاصل کیا جا رہا ہے۔ اس موقع پر انہوں نے طلاق کے مسئلہ پر دو چیزوں پر زور دیا۔ انہوں نے مرکزی حکومت سے اس معاملے میں مداخلت نہ کرنے کی گزارش کی اور دوسرے ایک ساتھ تین طلاق دینے والوں کا سماجی بائیکاٹ کئے جانے کا اعلان کیا۔

پیشے سے وکیل مسٹر ظفریاب جیلانی نے کہا کے تین طلاق کے معاملے سے بی جے پی سیاسی فائدہ حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ مسلم بہنوں کی فکر کرنے والی بی جے پی کو متھرا، کاشی اور ہری دوار میں بھیک مانگ کر گزارہ کرنے والی بہنوں کے بارے میں بھی سوچنا چاہیے۔ ایک ساتھ تین طلاق پر روک لگانے کے لئے حکومت کی طرف سے دس مسلم ملکوں میں قانون نافذ ہونے کا حوالہ دیا جا رہا ہے۔ بورڈ بھی ان ملکوں میں طلاق کے قانون کے بارے میں اپنی سطح سے پتہ لگا رہا ہے۔ قانونی جنگ کو مضبوطی سے لڑنے کے لئے وکلاء کی ٹیم بنائی گئی ہے۔ مسلمان شوہر کو تین طلاق دینے کا حق ہے لیکن شریعت نے اسے غلط قرار دیا ہے۔ اس سے مسلم سماج کے ان لوگوں کو باخبر کرانے کی ضرورت ہے جو ناخواندہ ہیں۔

تین طلاق پر بی جے پی کا غلط پروپیگنڈہ مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش: ظفریاب جیلانی

مسٹر جیلانی نے کہا کہ شریعت کی معلومات نہ ہونے والے مسلمان طلاق کے نام پر خواتین کا استحصال کر رہے ہیں۔ درگاہ اور مساجد بھی لوگوں کو شریعت کی صحیح معلومات دیں، تا کہ طلاق سے متعلق غلط فہمی دور ہو سکے۔اس کا صحیح شکل میں استعمال ہو۔ مسلم بہنوں کو کسی کے بہکاوے میں نہیں آنے کی صلاح دی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ شاہ بانو کو بھی بھڑكا كر استعمال کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ نکاح اور طلاق شریعت کا قانون ہے، اس لئے یہ نہ بدلا ہے اور نہ بدلے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز