ڈاکٹر ذاکر نائیک کا انٹرپول کو خط ، مذہب کی بنیاد پر مودی حکومت بنارہی ہے نشانہ ، الزامات کی تردید

معروف اسلامی اسکالر ڈاکٹر ذاکر نائیک نے مودی حکومت پر سنگین الزامات عائد کرتے ہوئے انٹرپول سے ہندوستان کی حکومت کی طرف سے جاری ریڈ کارنر نوٹس جاری کرنے کی درخواست کو خارج کرنے کی اپیل کی ہ

Aug 31, 2017 06:02 PM IST | Updated on: Aug 31, 2017 06:02 PM IST

نئی دہلی : معروف اسلامی اسکالر ڈاکٹر ذاکر نائیک نے مودی حکومت پر سنگین الزامات عائد کرتے ہوئے انٹرپول سے ہندوستان کی حکومت کی طرف سے جاری ریڈ کارنر نوٹس جاری کرنے کی درخواست کو خارج کرنے کی اپیل کی ہے ۔ ڈاکٹر ذاکر نائیک نے کہا کہ میں عدالتی کارروائی سے راہ فرار اختیار نہیں کررہا ہوں ۔

فرانس میں موجود انٹر پول کے سکریٹری جنرل کو ڈاکٹر ذاکر نائیک کے وکلا کی جانب سے ایک خط بھیجا گیا ہے ۔ خط کی کاپی سی این این نیوز ۱۸ کے پاس موجود ہے ۔ خط میں کہا گیا ہے کہ ریڈ کارنر نوٹس جاری اور پبلش نہ کیا جائے ، کیونکہ ہندوستانی حکومت کی عرضی انٹرپول کے قوانین کے مطابق نہیں ہے۔ ساتھ ہی ساتھ خط میں منی لانڈرنگ اور دہشت گردی سے متعلق الزامات کی تردید بھی کی گئی ہے۔

ڈاکٹر ذاکر نائیک کا انٹرپول کو خط ، مذہب کی بنیاد پر مودی حکومت بنارہی ہے نشانہ ، الزامات کی تردید

ڈاکٹر ذاکر نائیک: فائل فوٹو

Loading...

خط میں لکھا گیا ہے کہ جب ایک ہندو راشٹر وادی سرکار نے ہندوستان کے مسلم اقلیتوں میں شہرت یافتہ اسلامی اسکالر کے خلاف مجرمانہ کارروائی شروع کی ہے اور دہشت گردی فروغ دینے جیسے سنگین الزامات لگاکر اس کی عزت کو خاک میں ملانے کا کام کیا ہے تو ایسی صورت میں خاص احتیاط کی ضرورت ہے ۔ خط میں لکھا گیا ہے کہ فوجداری کارروائی کا سیاسی فائدے کیلئے غلط استعمال کیا جارہا ہے  ۔ اس کے ذریعہ ڈاکٹر نائیک کی شخصی آزادی میں خلل بھی ڈالا جارہا ہے۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز