جموں و کشمیر : ممبئی دہشت گردانہ حملہ کے ماسٹر مائنڈ ذکی الرحمان لکھوی کا بھتیجا مارا گیا

Nov 18, 2017 10:34 PM IST | Updated on: Nov 18, 2017 10:34 PM IST

سری نگر : شمالی کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ کے حاجن میں ہفتہ کے روز جنگجوؤں اور سیکورٹی فورسز کے مابین ہونے والے ایک مسلح تصادم میں ممبئی دہشت گردانہ حملوں کے ماسٹر مائنڈ ذکی رحمان لکھوی کے بھتیجے سمیت لشکر طیبہ سے وابستہ 6 پاکستانی جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا۔ کئی گھنٹوں تک جاری رہنے والے اس مسلح تصادم میں انڈین ایئر فورس (آئی اے ایف) کا ایک کمانڈو ہلاک جبکہ دو فوجی اہلکار زخمی ہوگئے ۔

جموں وکشمیر کے پولیس سربراہ ڈاکٹر شیش پال وید نے مسلح تصادم میں 6 جنگجوؤں کی ہلاکت کو سیکورٹی فورسز کے لئے ایک بڑی کامیابی قرار دیا ہے۔ پولیس سربراہ کے مطابق مارے گئے جنگجوؤں میں ممبئی دہشت گردانہ حملوں کے ماسٹر مائنڈ ذکی رحمان لکھوی کا بھتیجا بھی شامل ہے۔ انہوں نے مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر مسلح تصادم کے ختم ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ’مسلح تصادم ختم ہوگیا ہے۔ یہ ایک کامیاب آپریشن رہا۔ تصادم میں 6 جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا جن کے قبضے سے ہتھیار اور گولہ بارود برآمد کئے گئے‘۔

جموں و کشمیر : ممبئی دہشت گردانہ حملہ کے ماسٹر مائنڈ ذکی الرحمان لکھوی کا بھتیجا مارا گیا

انہوں نے کہا ’مارے گئے جنگجوؤں میں ذاکر رحمان مکی کابیٹا اور ذکی رحمان لکھوی (ممبئی دہشت گردانہ حملے کے ماسٹر مائنڈ) کا بھتیجا اُوید بھی شامل ہے‘۔ ڈاکٹر شیش پال وید نے ایک اور ٹویٹ میں کہا ’لشکر طیبہ کمانڈروں ذرگام اور محمود کو بھی تصادم میں ہلاک کیا گیا۔ مارے گئے سبھی جنگجوؤں کا تعلق پاکستان سے ہے‘۔ انہوں نے مزید لکھا ’ یہ سیکورٹی فورسز کے لئے ایک بڑی کامیابی ہے‘۔

وزارت دفاع کے ترجمان کرنل راجیش کالیا نے یو این آئی کو بتایا کہ ضلع بانڈی پورہ کے چندر گیر حاجن میں جنگجوؤں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر فوج کی 13 راشٹریہ رائفلز (آر آر)، جموں وکشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ اور 45 بٹالین سی آر پی ایف نے مذکورہ علاقہ میں ہفتہ کو ایک مشترکہ تلاشی آپریشن شروع کیا۔ انہوں نے بتایا ’جب سیکورٹی فورسز مذکورہ علاقہ میں ایک مخصوص جگہ کی جانب پیش قدمی کررہے تھے تو وہاں موجود جنگجوؤں نے ان پر خودکار ہتھیاروں سے اندھا دھند فائرنگ کی‘۔ راجیش کالیا نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز نے جوابی فائرنگ کی جس کے بعد طرفین کے مابین باضابطہ طور پر گولہ باری کا تبادلہ شروع ہوا۔

انہوں نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز نے ابتدائی جوابی کاروائی میں پانچ جنگجوؤں کو ہلاک کیا جبکہ بعدازاں ایک اور جنگجو کو ہلاک کیا گیا۔ تاہم جنگجوؤں کی فائرنگ سے انڈین ایئر فورس کا ایک کمانڈو ہلاک جبکہ دو فوجی اہلکار زخمی ہوگئے۔ دفاعی ترجمان نے بتایا کہ زخمی فوجی اہلکاروں کو علاج ومعالجہ کے لئے اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ دریں اثنا چندر گیر سے ملحقہ دیہات میں بڑے پیمانے پر سیکورٹی فورس مخالف احتجاجی مظاہرے شروع ہوگئے ہیں۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ احتجاجیوں کی جانب سے آپریشن میں رخنہ اندازی کو روکنے کے لئے علاقہ میں سیکورٹی فورسز کی بھاری جمعیت تعینات کی گئی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز