شمالی کوریا کا ایک اور بیلسٹک میزائل تجربہ

پیانگ یانگ۔ جنوبی کوریا کی خبر رساں ایجنسی ’يوناپ نے‘ جوائنٹ چیف آف اسٹاف کے حوالے سے خبر دی ہے کہ شمالی کوریا نے آج هوانگ سونگ -14 طویل فاصلے بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا ہے۔

Nov 29, 2017 02:41 PM IST | Updated on: Nov 29, 2017 02:41 PM IST

پیانگ یانگ۔ جنوبی کوریا کی خبر رساں ایجنسی ’يوناپ نے‘ جوائنٹ چیف آف اسٹاف کے حوالے سے خبر دی ہے کہ شمالی کوریا نے آج هوانگ سونگ -14 طویل فاصلے بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا ہے۔دوسری جانب، ایک فوجی ترجمان نے رائٹرز کو اس رپورٹ کی تصدیق کرنے سے انکار کر دیا۔ جنوبی کوریا میں عسکری قیادت کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا نے ایک بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا ہے۔ جنوبی کوریا کا کہنا ہے کہ انھوں نے جواب میں پریسزژن اسٹرائک میزائل مشقیں کیں ہیں۔

امریکی محکمہ دفاع پنٹاگن کا کہنا ہے کہ وہ شمالی کوریا کے اس ممکنہ تجربے کا جائزہ لے رہا ہے۔ اطلاعات کے مطابق یہ تجربہ مقامی وقت کے مطابق رات گئے ساڑھے تین بجے کیا گیا۔ جنوبی کوریا کے خبر رساں ادارہ ’یوناپ ‘کے مطابق مذکورہ میزائل جنوبی پیونگان صوبے میں پیونگ سونگ سے مشرق کی جانب اڑا۔اب تک یہ واضح نہیں کہ یہ میزائل کتنی دور تک سفر کر سکا اور کیا یہ ماضی کے میزائلوں کی طرح جاپان کی فضائی حدود تک پہنچا۔ اس سال شمالی کوریا نے متعدد بیلسٹک میزائلوں کے تجربے کیے ہیں جن میں ان کا پہلا بین الابراعظمی بیلسٹک میزائل بھی شامل ہے۔ اسی دوران شمالی کوریا کے جوہری پروگرام کے حوالے سے عالمی سطح پر کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔

شمالی کوریا کا ایک اور بیلسٹک میزائل تجربہ

علامتی تصویر: فائل فوٹو

شمالی کوریا اقوام متحدہ کی پابندیوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنے جوہری اسلحے کے پروگرام پر عمل پیرا ہے۔ پیانگ یانگ نے اپنے میزائل پروگرام کے منصوبے کو راز میں بھی نہیں رکھا کہ وہ ایسا میزائل بنانا چاہتا ہے جو امریکہ کی سرزمین کو نشانہ بنا سکے اور یہ کہ اس نے ہائیڈروجن بم تیار کر لیا ہے۔ گذشتہ ماہ امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس نے کہا تھا کہ شمالی کوریا کی جانب سے جوہری حملے کا خطرہ بڑھ رہا ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز