پناما کیس : پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف کی بیٹی مریم نواز کو جے آئی ٹی نے کیا طلب

Jun 27, 2017 10:06 PM IST | Updated on: Jun 27, 2017 10:08 PM IST

اسلام آباد : پاکستان کے وزیر اعظم نواز شریف کی بیٹی مریم نواز کو مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جےآئي ٹي) کے سامنے پیش ہونے کے لئے سمن بھیجا گیا ہے۔  پاکستانی اخبار ’ڈان‘ کی ایک رپورٹ کے مطابق پناما پیپرس بدعنوانی معاملے میں مریم کو بھیجے گئے اس سمن میں جےآئي ٹي نے پانچ جولائی کو پوچھ گچھ کے لئے پیش ہونے کو کہا ہے۔  مریم کو سمن جاری ہونے کے فورا بعد پاکستان مسلم لیگ-نواز (پی ایم ایل-این) کے رہنما طلال چودھری نے بتایا کہ مریم اپنےبیٹے کے گریجویٹ بننے کے جشن میں شامل ہونے کے لئے فی الحال لندن میں ہیں۔

مسٹر نواز شریف 15 جون کو جےآئي ٹي کے سامنے پیش ہوئے تھے۔ وہ وزیر اعظم کے عہدے پر رہتے جےآئي ٹي کے سامنے پیش ہونے والے پہلے وزیر اعظم ہیں۔ جےآئي ٹي نے وزیر اعظم کے بیٹوں حسن اور حسین نواز سے بھی مزید تحقیقات کے سلسلے میں سوال پوچھنے کے لئے بالترتیب تین اور چار جولائی کو پیش ہونے کے لئے کہا ہے۔  وزیر اعظم کے بڑے بیٹے حسین پہلے بھی پانچ بار جےآئي ٹي کے سامنے پیش ہو چکے ہیں۔ وزیر اعظم کے چچیرے طارق شفیع کو بھی دو جولائی کو پیش ہونے کے لئے کہا گیا ہے۔ وہ دوسری بار جےآئي ٹي کے سامنے پیش ہوں گے۔

پناما کیس : پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف کی بیٹی مریم نواز کو جے آئی ٹی نے کیا طلب

file photo

چھ رکنی جےآئي ٹي ٹیم کو 10 جولائی کو عدالت عظمی میں رپورٹ پیش کرنی ہے۔ نواز شریف پر منی لانڈرنگ کے ذریعے لندن کے پارک لین کے علاقے میں چار اپارٹمنٹ خریدنے کا الزام ہے۔  پناما پیپر معاملے میں 20 اپریل کو سپریم کورٹ نے جےآئي ٹي کے قیام کا حکم دیا تھا۔ وزیر اعظم اور ان کے بیٹے بیٹی اور کزن پر دولت کا غبن کرنے کا الزام ہے۔  نواز شریف کے بھائی اور پنجاب کے وزیر اعلی شہباز شریف بھی گزشتہ ہفتے جےآئي ٹي کے سامنے پیش ہوئے تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز