امریکہ پھر کرنے والا تھا اسامہ بن لادن جیسا آپریشن ، مگر بچ پاکستان ، پڑھیں کیا ہے پورا معاملہ

امریکہ ایک مرتبہ پھر پاکستان میں اسی طرح سے آپریشن چلانے والا تھا، جس طرح اس نے 2011 میں پاکستان میں بیٹھے القاعدہ سربراہ اسامہ بن لادن کے خلاف چلایا تھا۔

Oct 18, 2017 11:34 PM IST | Updated on: Oct 18, 2017 11:34 PM IST

نیویارک : امریکہ ایک مرتبہ پھر پاکستان میں اسی طرح سے آپریشن چلانے والا تھا، جس طرح اس نے 2011 میں پاکستان میں بیٹھے القاعدہ سربراہ اسامہ بن لادن کے خلاف چلایا تھا۔ ذرائع کے مطابق پانچ سال قبل حقانی نیٹ ورک نے ایک امریکی شہری اور اس کے اہل خانہ کا اغوا کرلیا تھا ، جس کے بعد امریکہ نے یہ منصوبہ بندی کی تھی ، تاہم امریکی دباو میں آکر پاکستان کارروائی کرنے پر رضامند ہوگیا تھا ، جس کی وجہ سے امریکہ نے اپنے ارادہ کو ترک کردیا۔

نیویارک ٹائمس کی ایک رپورٹ کے مطابق ایک سرکاری عہدیدار نے کہا کہ اگر پاکستانی فوج نے اہل خانہ کی بازیابی کیلئے قدم نہیں اٹھائے ہوتے تو یہ مانا جاتا کہ وہ طالبان سے وابستہ حقانی نیٹ ورک کے ساتھ مل کر کام کررہا ہے۔ تاہم امریکہ کی وارننگ کے کچھ ہی دیر بعد پاکستان نے اس کے خلاف کارروائی شروع کردی۔

امریکہ پھر کرنے والا تھا اسامہ بن لادن جیسا آپریشن ، مگر بچ پاکستان ، پڑھیں کیا ہے پورا معاملہ

نیویارک ٹائمس نے کسی سینئر امریکی اہلکار کا نام ظاہر کئے ہوئے رپورٹ دی ہے کہ شروع میں اس آپریشن کیلئے نیوی سیل ٹیل 6 تیاری تھی ، مگر بعد میں اس کو واپس بلالیا گیا۔ سی آئی اے کے ایک ڈرون نے شمالی مغربی پاکستان میں حقانی نیٹ ورک کے ایک کیمپ میں اس کنبہ کی مودجودگی کی نشاندہی کی تھی ، لیکن بعد میں کچھ امریکی اہلکاروں نے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ یہ صحیح نہیں بھی ہوسکتا ہے ، اس لئے آپریشن کو روک دیا گیا۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز