عراق میں اسلامک اسٹیٹ کے خلاف جنگ میں پاکستان کی مدد

Jul 15, 2017 08:22 PM IST | Updated on: Jul 15, 2017 08:22 PM IST

اسلام آباد۔ عراق نے کہا ہے کہ موصل میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی مدد سے انتہا پسند تنظیم اسلامک اسٹیٹ کو بھگانے میں مدد ملی ہے۔ اسلامک اسٹیٹ کے خلاف گذشتہ تین سال سے جاری جنگ کے بعد موصل کو اس سے آزاد کرلیا گیا ہے۔ پاکستان میں عراق کے سفیر علی یاسین محمد کریم نے آج یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ پاکستان کا نام بھی ان ملکوں میں شامل ہے جنہوں نے عراق میں اسلامک اسٹیٹ کے خلاف جنگ میں مدد کی ہے۔عراق میں اسلامک اسٹیٹ کے خلاف جنگ میں پاکستان کے رول کے بارے میں اس سے قبل پاکستانی حکام یا عراقی افسران نے کبھی تصدیق نہیں کی تھی۔

مسٹر کریم نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے عراق کو دہشت گردوں کے بارے میں خفیہ معلومات کے علاوہ ہتھیاروں اور گولہ بارود اور طبی امداد مہیا کرائی گئی تھی۔انہوں نے کہا کہ کچھ عراقی پائلٹوں کو پاکستان میں تربیت دی گئی تھی جنہوں نے اسلامک اسٹیٹ کے خلاف فضائی حملوں میں حصہ لیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ اسلامک اسٹیٹ پاکستان اور عراق دونوں کے لئے یکساں طور پر دشمن ہے۔

عراق میں اسلامک اسٹیٹ کے خلاف جنگ میں پاکستان کی مدد

علامتی تصویر: تصویر ٹوئٹر

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز