روہنگیا مسلمانوں کی سلامتی کو یقینی بنانے کیلئے پاکستان نے میانمار پر دیا زور

پاکستان کی وزارت خارجہ نے میانمار میں رہنگیا مسلمانوں پر ظلم و تشدد کے واقعات میں اموات کی تعداد بڑھنے اور بڑی تعداد میں لوگوں کے نقل مکانی کرنے پر مجبور ہونے کی خبروں پر اپنی تشویش ظاہر کی ہے ۔

Sep 04, 2017 07:17 PM IST | Updated on: Sep 04, 2017 07:17 PM IST

اسلام آباد: پاکستان کی وزارت خارجہ نے میانمار میں رہنگیا مسلمانوں پر ظلم و تشدد کے واقعات میں اموات کی تعداد بڑھنے اور بڑی تعداد میں لوگوں کے نقل مکانی کرنے پر مجبور ہونے کی خبروں پر اپنی تشویش ظاہر کرتے ہوئے میانمار کی حکومت سے اس معاملے میں فوری کارروائی کرنے اور تشدد کے شکار روہنگيا مسلمانوں کی سلامتی یقینی بنانے پر زور دیاہے ۔ روزنامہ 'دی ایکسپریس ٹرائبون' کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ روز وزارت خارجہ کی طرف سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گيا ہے کہ "اگر ان خبروں کی تصدیق ہوجاتی ہے، تو یہ عین عید الاضحی کے موقع پر سخت تشویش اور تکلیف کا باعث ہيں"۔

اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن برائے پناہ گزیں (یو این ایچ سی آر) کی رپورٹ کے مطابق حالیہ دنوں میں میانمار میں ظلم و تشدد کا شکار ہونے والے 27 ہزار روہنگیا مسلمان بے گھر ہوئے ہيں، جہاں بنگلہ دیش کی سرحد پر ندی کے ساحل میں سیکڑوں افراد کی لاشیں برآمد ہوئی ہيں، جو میانمار سے بنگلہ دیش منتقل ہونے کی کوشش میں ندی کو پار کرتے ہوئے گزشتہ جمعہ کو غرقاب ہوگئے تھے۔

روہنگیا مسلمانوں کی سلامتی کو یقینی بنانے کیلئے پاکستان نے میانمار پر دیا زور

روہنگیا پناہ گزیں بنگلہ دیش کے ایک کیمپ کی طرف جاتے ہوئے، تصویر، رائٹرز: علامتی تصویر

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ "اجتماعی قتل ، فرقہ وارانہ تشدد اور میانمار کی سکیورٹی فورس نیز جنگجوؤں کے ذریعہ دیہی گاؤں کو منظم طریقے سے نذر آتش کئے جانے سے حالات مزید کشیدہ ہوگئے ہیں، جس سے صورتحال بے قابو ہوجانے کا خوف ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز