اقوام متحدہ میں پاکستان نے ہندوستان پر پھر لگائے الزامات ، کہا : تمام پڑوسیوں کے خلاف جارحیت کا مرتکب

پاکستان نے آج ان تمام الزامات کو مسترد کردیا جو ہندوستانی وزیر خارجہ سشما سوراج اور اقوام متحدہ میں ہندوستان کے ایک نمائندہ نے عائد کئے ہیں۔

Sep 24, 2017 08:09 PM IST | Updated on: Sep 24, 2017 08:09 PM IST

نئی دہلی: پاکستان نے آج ان تمام الزامات کو مسترد کردیا جو ہندوستانی وزیر خارجہ سشما سوراج اور اقوام متحدہ میں ہندوستان کے ایک نمائندہ نے عائد کئے ہیں۔ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 72 ویں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اقوام متحدہ پاکستان کی مستقل نمائندہ ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ ہندوستان کو خطہ میں جنگ بندی کی خلاف ورزی کرنے سے روکے۔ محترمہ لودھی نے دو ٹوک الفاظ میں دہشت گردانہ سرگرمیوں میں پاکستان کے ملوث ہونے کے الزامات کو مسترد کردیا اور الٹا ہندوستان پر الزام لگایا کہ وہ اپنے تمام پڑوسیوں کے خلاف دہشت گردی اور جارحیت میں اعانت کرتا رہا ہےاور جنوب ایشیا میں دہشت گردی کا سرچشمہ ہے۔

محترمہ سوراج کی تقریر کا جواب دیتے ہوئے جس میں انہوں نے پاکستان کو دہشت گردی ایکسپورٹ فیکٹری سے موسوم کیا تھا، محترمہ لودھی نے کہا کہ خطہ میں دہشت گردی کی سرکاری سرپرستی کا ہندوستان کو اچھا خاصا تجربہ ہے۔ پاکستانی نمائندہ نے سوراج کی تقریر کو بہتان اور افتراپردازی کا دفتر قرار دیا اور کہا کہ میرے ملک سے متعلق ان کے بیانات اس عداوت اور دشمنی کی عکاسی کرتے ہیں جو ہندوستانی قیادت نے پاکستان کے ساتھ روا رکھی ہے جسے ہم 70 سال سے برداشت کررہے ہیں۔

اقوام متحدہ میں پاکستان نے ہندوستان پر پھر لگائے الزامات ، کہا : تمام پڑوسیوں کے خلاف جارحیت کا مرتکب

اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل نمائندہ ڈاکٹر ملیحہ لودھی

ڈاکٹر لودھی نے کشمیر کے حوالہ سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں کے نفاذ پر زور دیتے ہوئے مطالبہ کیا کہ اقوام متحدہ کا ایک خصوصی نمائندہ مقرر کیا جائے جو اس بات کو یقینی بنائے کہ ہندوستان اپنی قانونی ذمہ داریوں کو پورا کررہا ہے۔ ہندوستان وزیر خارجہ کے اس دعوی کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادیں غیر متعلق ہوچکی ہیں۔ محترمہ لودھی نے کہا کہ قانون کبھی فرسودہ نہیں ہوتا اور نہ ہی اخلاقی پیمانے پر بدلتے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز