سشما سے بات چیت کے بعد پاکستان نے رہا کئے نظام الدین درگاہ کے دونوں خدام

Mar 18, 2017 09:31 PM IST | Updated on: Mar 18, 2017 09:31 PM IST

نئی دہلی۔ پاکستان سے لاپتہ ہو گئے دہلی کی حضرت نظام الدین اولیاء درگاہ کے خدام آصف علی نظامی اور ان کے بھتیجے نجيم علی نظامی کے بارے میں اچھی خبر آئی ہے۔ وزیر خارجہ سشما سوراج نے ٹویٹ کر معلومات دی ہے کہ پاکستانی وزیر اعظم کے مشیر سرتاج عزیز سے بات چیت کے بعد دونوں کو رہا کر دیا گیا ہے۔ خبروں کے مطابق دونوں صوفی خدام 20 مارچ کو ہندوستان واپس لوٹ آئیں گے۔ بتا دیں کہ اس سے پہلے پاکستانی میڈیا اور نیوز ایجنسی پی ٹی آئی نے انکشاف کیا تھا کہ پاک خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی نے دونوں کو حراست میں لیا ہوا تھا۔ تاہم اس بارے میں صورت حال اب بھی واضح نہیں ہے۔

جمعرات سے لاپتہ ہیں دونوں شخص

سشما سے بات چیت کے بعد پاکستان نے رہا کئے نظام الدین درگاہ کے دونوں خدام

بتا دیں کہ نظام الدین درگاہ کے خادم آصف علی نظامی اور ان کے بھتیجے نجيم علی نظامی لاہور ایئرپورٹ سے جمعرات سے لاپتہ ہو گئے تھے۔ اس بارے میں ہندوستانی وزیر خارجہ سشما سوراج نے بھی پاکستانی حکام سے بات چیت کی تھی۔ پاکستانی میڈیا کی مانیں تو آئی ایس آئی نے ان دونوں کو غیر قانونی طریقے سے پاکستان آنے کی وجہ سے حراست میں لیا ہے۔

کیا ہے معاملہ

واضح رہے کہ آصف نظامی اور نجيم نظامی لاہور کی داتا دربار درگاہ پر گئے تھے۔ انہیں بدھ کو وہاں سے واپس آنے کے لئے کراچی کی فلائٹ میں بیٹھنا تھا لیکن لاہور ایئر پورٹ پر ادھورے سفری دستاویزات ہونے کا حوالہ دے کر انہیں روکا گیا تھا۔ ذرائع کے مطابق ایک خادم لاہور ایئرپورٹ سے جبکہ دوسرے خادم کراچی ایئرپورٹ سے لاپتہ ہو گئے تھے۔

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز