پاکستان : اسلام آباد میدان جنگ میں تبدیل ، 200 سے زائد افراد زخمی ، ٹیلی ویزن چینلوں کے نشریہ پر پابندی

پاکستان میں ایک دھرنا ختم کرانے کے لیے سیکورٹی فورسیز نے آپریشن شروع کردیا ہے ، جس کے نتیجے میں پاکستان کی راجدھانی اسلام آباد میدان جنگ بن گئی ہے۔

Nov 25, 2017 01:06 PM IST | Updated on: Nov 25, 2017 10:08 PM IST

اسلام آباد: پاکستان میں ایک دھرنا ختم کرانے کے لیے سیکورٹی فورسیز نے آپریشن شروع کردیا ہے ، جس کے نتیجے میں پاکستان کی راجدھانی اسلام آباد میدان جنگ بن گئی ہے۔ پاک میڈیا رپورٹس کے مطابق سیکورٹی فورسیز اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں میںراولپنڈی کے پولیس سربراہ اور 73سیکورٹی اہلکاروں سمیت 200سے زائد افراد زخمی ہوگئے ہیں ۔تاہم ہلاکتوں کی تعداد کے بارے میں ابھی کچھ نہیں بتایا جارہا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ اسلام آباد میں 20 روز سے مذہبی جماعتوں کا دھرنا جاری تھا اور مظاہرین الیکشن کے کاغذات نامزدگی میں ختم نبوت سے متعلق ترمیم کرنے والوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کررہے تھے۔ دھرنا کی وجہ سے اسلام آباد اور راولپنڈی کے شہریوں کو شدید پریشانیو ں کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔ انتظامیہ نے مظاہرین کو دھرنا ختم کرنے کے لیے 25 نومبر تک کی ڈیڈ لائن دی تھی ، جس کے ختم ہونے کے بعد یہ آپریشن کیا گیا۔

پاکستان : اسلام آباد میدان جنگ میں تبدیل ، 200 سے زائد افراد زخمی ، ٹیلی ویزن چینلوں کے نشریہ پر پابندی

پاکستانی میڈیا کی اطلاعات کے مطابق احتجاجی مظاہرین کی مزید ریلیاں اسلام آباد کی طرف آنی شروع ہوگئی ہیں اور حالات بے قابو ہوتے جارہے ہیں ۔جب کہ جڑواں شہروں میں شدید کشیدہ صورت حال ہے۔ مظاہرین نے پولیس موبائل اور کئی موٹرسائیکلوں کو نذر آتش کردیا جبکہ کئی سڑکیں بھی بند کردی گئی ہیں۔

ٹیلی ویزن چینلوں کے نشریہ پر پابندی

Loading...

پاکستانی حکام نے قومی دارالحکومت اسلام آباد میں شدت پسند مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے سیکیورٹی فورسز کی کارروائی کے بعد کی صورتحال کے پیشِ نظر تمام پرائیویٹ ٹیلی ویزن نیوز چینلز کو عارضی طور پر بند کرنے کا حکم دے دیا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی حکم پر پاکستان الیکٹرونک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) نے پہلے تمام ٹی وی چینلز کو دھرنے کی کوریج نہ دینے کی ہدایت جاری کی تھیں بعدِ ازاں تمام پرائیویٹ ٹی وی چینلز کو بند کرنے کا حکم دے دیا۔

وزیر اعظم کی ہدایت کے فوری بعد ملک کے مختلف علاقوں میں نیوز چینلز بند ہونا شروع ہوگئے۔پیمرا کی جانب سے جاری کردہ نوٹفیکیشن کے مطابق تمام میڈیا ہاؤسز کو اپنے اسٹاف کی سیکیورٹی یقینی بنانے کی ہدایت جاری کی گئیں۔پیمرا کے مطابق قانون نافذ کرنے والے اداروں کی پوزیشنز کو ٹیلی ویزن پر براہِ راست نہ دکھایا جائے۔اس کے ساتھ ساتھ ملک بھر میں سماجی رابطے کی مقبول ترین ویب سائٹس فیس بک اور ٹوئٹر بھی بلاک ہونا شروع ہوگئیں ہیں۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز