پاکستان کے پشاور میں گھر چھوڑ کر بھاگنے کو مجبور ہیں سکھ کمیونٹی کے لوگ

پاکستان کے پشاور میں سکھ اقلیتی کمیونٹی کے لوگ اپنا گھر چھوڑ کر بھاگنے کو مجبور ہیں۔

Jun 13, 2018 11:07 AM IST | Updated on: Jun 13, 2018 01:19 PM IST

پاکستان کے پشاور میں سکھ اقلیتی کمیونٹی کے لوگ اپنا گھر چھوڑ کر بھاگنے کو مجبور ہیں۔پشاور میں رہنے والے قریب 30،000 اقلیتی سکھ کمیونٹی 60 فیصدی سے زیادہ لوگ پشاور چھوڑ کر کسی اور علاقے میں  جا چکے ہیں۔ٹی آر ٹی ورلڈ نیوز کے مطابق حال ہی میں  'پیس ویکٹوسٹ' چرنجیت سنگھ کی کسی نے ان کا دکان میں گولی مار کر قتل کر دیا۔بعد میں اسپتال لے جاتے وقت ان کی موت ہو گئی۔سکھ کمیونٹی کے ترجمان نے ایک میڈیا کو بتایا کہ "میں سمجھتا ہوں کہ سکھوں کا قتل عام کیا جا رہا ہے"۔

پاکستان سکھ کاؤنسل کے ایک ممبر نے اپنی پگڑی کی طرگ اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ "ہم لوگ ا؛گ دکھتے ہیں "۔کچھ لوگوں کا ماننا ہے کہ طالبان کے لوگ ایسا کر رہے ہیں۔

پاکستان کے پشاور میں گھر چھوڑ کر بھاگنے کو مجبور ہیں سکھ کمیونٹی کے لوگ

سورس:اے این آئی

بتادیں کہ 2016 میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سکھ لیڈر کا قتل کر دیا گیا ۔طالبان کے ذریعے اس کی ذإہ داری لینے کے باوجود بھی پولیس نے ان کے سیاسی مخالف ایک ہندو لیڈر بلدیو سنگھ کو ان کے قتل کے الزام میں گرفتار کر لیا۔حالانکہ ثبوتوں کیغیر موجودگی میںپولیس  کو 2 سال تک چلے ٹرائل کے بعد انہیں چھوڑنا پڑا۔पड़ा.

ری کمنڈیڈ اسٹوریز