امریکی سفارت خانے کی تبدیلی سے امن کے عمل کو نقصان پہنچنے کا امکان : فلسطینی صدر محمود عباس

Jan 15, 2017 12:05 PM IST | Updated on: Jan 15, 2017 12:05 PM IST

ویٹیکن سٹی: فلسطین کے صدر محمود عباس نے کہا کہ امریکہ کے نو منتخب صدر ڈونالڈ ٹرمپ اپنی منصوبہ بندی کے تحت اگر امریکی سفارت خانے کو اسرائیل سے یروشلم لائیں گے تو امن عمل کو نقصان ہو سکتا ہے۔

ٹرمپ کی منصوبہ بندی یروشلم کو اسرائیل کے دارالحکومت کے طور پر تسلیم کرنے اور امریکی سفارت خانے کو تل ابیب سے ہٹا کر یروشلم لے جانے کی ہے۔تاہم فلسطینی اس اقدام کی مخالفت کر رہے ہیں۔

امریکی سفارت خانے کی تبدیلی سے امن کے عمل کو نقصان پہنچنے کا امکان : فلسطینی صدر محمود عباس

مسٹر عباس نے یہاں پوپ فرانسس سے وسطی ایشیا کے حالات پر بات چیت کرنے کے بعد صحافیوں سے کہا ’امریکی سفارت خانے کا مقام تبدیل کرنے کے معاملے میں ہم ٹرمپ کی منصوبہ بندی پر نظر رکھ رہے ہیں۔اگر ایسا ہوتا ہے تو امن بحالی میں مدد نہیں ملے گی اور ہم نہیں چاہتے کہ ایسا ہو۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز