بدعنوانی اور کالے دھن سے نجات کیلئے سخت اور بڑے فیصلے کئے: نریندر مودی

Sep 07, 2017 11:52 AM IST | Updated on: Sep 07, 2017 11:57 AM IST

ینگون۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے  کہا کہ ان کی حکومت نے ملک کو بدعنوانی اور کالے دھن سے پا ک کرنے کیلئے ’بڑے اور سخت‘ فیصلے کئے ہیں اور گزشتہ تین برسوں میں تبدیلی کے دور کی شروعات ہوئی اور ہندستان کی آواز اب پوری دنیا میں سنی جا رہی ہے۔ مسٹر مودی نے یہاں ہند نژاد لوگوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت نے ملک کی آزادی کے 75 ویں سال مکمل ہونے تک ’نیو انڈیا‘ بنانے کا عزم کیا ہے اور اس کیلئے اس کے لئے چھوٹی موٹی تبدیلی نہیں بلکہ پوری تبدیلی میں مصروف ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نے ملک کے مفاد میں ’بڑے اور سخت‘ فیصلے کئے ہیں اور یہ فیصلہ اس نے بغیر کسی ہچکچاہٹ یا ڈر کے کیا ہے۔ کالے دھن اور بدعنوانی سے پاک کرنے کیلئے نوٹ بندی اور جی ایس ٹی لاگو کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ مٹھی بھر لوگوں کی بدعنوانی کی قیمت ملک کے سوا سو کروڑ لوگوں کو چکانی پڑ رہی تھی، جو ہمیں قطعی منظور نہیں تھا۔ کالے دھن کا کوئی پتہ نہیں تھا لیکن نوٹ بندی کے بعد لاکھوں ایسے لوگوں کا پتہ چلا ہے جن کے بینک کھاتوں میں لاکھوں کروڑوں روپئے جمع ہیں اوروہ ٹیکس نہیں دے رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ لاکھوں ایسی کمپنیوں کا پتہ چلا ہے، جو کالے دھن کو ادھر ادھر کر رہی تھیں اور گزشتہ تین ماہ کے دوران دو لاکھ سے زیادہ ایسی کمپنیوں کا رجسٹریشن رد کیا گیا ہے اور ان کے کھاتوں سے لین دین پر روک لگا دی گئی ہے۔

بدعنوانی اور کالے دھن سے نجات کیلئے سخت اور بڑے فیصلے کئے: نریندر مودی

وزیر اعظم نریندر مودی میانمار کے دورہ پر

وزیر اعظم نے تجارت میں شفافیت لانے کیلئے اشیاء اور سروس ٹیکس کی بات کرتے ہوئے کہا کہ اسے دو ماہ پہلے لاگو کیا گیا ہے اور جو کام چھ سال میں نہیں ہو سکتا تھا، وہ 60 دن میں ہوگیا ہے۔ اس کے لاگو ہونے کے بعد ایمانداری سے کاروبار کرنے کی روایت پیدا ہوئی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز