روہنگیا بحران کے پس منظر میں پوپ کا میانمار دورہ شروع

رنگون۔ روہنگیا بحران کے پس منظر میں مسیحی مذہبی پیشوا پوپ فرانسس میانمار کے دورے پر آج رنگون پہنچے۔

Nov 27, 2017 08:29 PM IST | Updated on: Nov 27, 2017 08:29 PM IST

رنگون۔ روہنگیا بحران کے پس منظر میں مسیحی مذہبی پیشوا پوپ فرانسس میانمار کے دورے پر آج رنگون پہنچے۔ دنیائے مسیحیت کے ممتاز ترین مذہبی پیشوا کا یہ حساس دورہ بدھسٹ اکثریتی ملک میانمار میں شروع ہورہا ہے، جس کو اقوام متحدہ نے روہنگیا آبادی کی نسل کشی کا مورد الزام ٹھہرایا ہے۔  میانمار میں روہنگیا آبادی پر فوج کی جارحانہ کارروائی اور انسانیت سوز تشدد کو دیکھتے ہوئے امریکہ نے بھی اسے منظم نسل کشی قرار دیا ہے، جس کے میانمار کو مغربی ممالک سمیت مسلم ممالک کی طرف سے سخت تنقید کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

میانمار کے دورے کے بعد پوپ بنگلہ دیش کے لئے روانہ ہوں گے، جہاں میانمار سے بھاگ کر تقریبا 6،20،000 روہنگیا افراد پناہ لئے ہوئے ہیں۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے میانمار کی حکومت اور فوج کی اس کارروائی کو 'انسانیت کے خلاف جرائم' قرار دیا ہے ، جن میں قتل، آبروریزی، تشدد، ظلم اور جبری نقل مکانی کے جرائم شامل ہیں۔ تاہم، میانمار کی فوج نے ان الزامات کی تردید کی ہے۔ میانمار کی 5.1 کروڑ کی آبادی میں محض سات لاکھ رومن کیتھولک ہیں۔ ہزاروں کی تعداد میں مسیحی افراد پوپ کی جھلک پانے کے لئے بسوں اور ٹرینوں کے ذریعے ینگون پہنچ رہے ہیں۔

روہنگیا بحران کے پس منظر میں پوپ کا میانمار دورہ شروع

پوپ فرانسس کی فائل فوٹو: رائٹرز۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز