حلف برداری کے بعد شدت پکڑتا ٹرمپ مخالف تشدد، اب تک 200 سے زائد لوگ گرفتار

واشنگٹن۔ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی حلف برداری کے ساتھ نئے عہد کے آغاز کے ساتھ امریکہ کی سیاسی تقسیم نے واشنگٹن کی سڑکوں پر تشدد برپا کر دیا ۔

Jan 21, 2017 07:17 PM IST | Updated on: Jan 21, 2017 07:17 PM IST

واشنگٹن۔  امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی حلف برداری کے ساتھ نئے عہد کے آغاز کے ساتھ امریکہ کی سیاسی تقسیم نے واشنگٹن کی سڑکوں پر تشدد برپا کر دیا ۔ ایسٹیبلشمنٹ مخالف سیاہ پوشوں نے آتش زنی مچائی، پولیس کے ساتھ جھڑپ کی، دوسری طرف ٹرمپ حامیوں نے نئے چیف ایگزیکٹوکا جشن منایا۔ رائٹر کے مطابق احتجاج اور مظاہروں میں اب تک 200 سے زائد لوگوں کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔ کپیٹل ہل میں ڈونلڈ ٹرمپ کی حلف برداری کی تقریب کو دیکھنے کے لیے پہنچنے والے ہزاروں حامیوں کے ساتھ ساتھ مظاہرین کی بڑی تعداد نے بھی واشنگٹن کا رخ کیا۔

سیاہ لباس میں ملبوس، چہرے پر ماسک چڑھائے اور ہاتھوں میں ٹرمپ کی مخالفت میں مختلف بینر اٹھائے ان مظاہرین نے مزاحمت پر پولیس اہلکاروں کی جانب خالی بوتلیں اور پتھر برسائے تو پولیس نے آنسو گیس کے گولے داغ کر انہیں روکنے کی کوشش کی ۔پولیس نے مظاہرین کوروکنے کے لیے مرچوں والے اسپرے کا بھی مبینہ طور پر استعمال کیا جس سے کئی افراد کی حالت غیر ہوگئی ۔اس دوران ایک ہیلی کاپٹر زمین سے کم فاصلے پر چکر لگاتا رہا۔ کئی مشتعل مظاہرین نے واشنگٹن میں بینک آف امریکہ کی برانچ اور ایک فاسٹ فوڈ ریسٹورنٹ کے شیشے بھی توڑ ڈالے، مشتعل افراد نے کالے رنگ کی لیموزین سمیت متعدد گاڑیوں کو آگ لگا دی جس میں ٹرمپ کی تصاویر اور بینرز پر درج ان کے نعروں کو بھی جھونک دیا گیا۔ ٹرمپ مخالف مظاہروں میں بزرگ و نوجوان افراد کے ساتھ ساتھ بچوں کی بھی بڑی تعداد نظر آئی۔ کہا جاتا ہے کہ صدارتی مہم کے دوران نسلی امتیاز کو ہوا دینے والے مبینہ بیانات کی وجہ سے بڑی تعداد میں لوگ ٹرمپ کے مخالف ہو گئے ہیں۔

حلف برداری کے بعد شدت پکڑتا ٹرمپ مخالف تشدد، اب تک 200 سے زائد لوگ گرفتار

تصویر: رائٹرز

وائٹ ہاؤس سے کچھ فاصلے پر کچرے کے ڈبوں کو اکھٹا کرکے ان میں آگ لگا دی گئی۔خبروں میں کہا گیا ہے کہ پورٹ لینڈ کے پائنیئر کورٹ ہاؤس اسکوائر میں ٹرمپ کی حلف برداری کے کچھ دیر بعد امریکہ کے جھنڈے بھی نذرآتش کیے گئے۔ پولیس کے مطابق مظاہرین کو روکنے کی کوشش میں چھ پولیس جوان زخمی بھی ہوئے۔ پولس نے بتا یا کہ مظاہرین کے ساتھ ہاتھا پائی میں دو افسران بھی مجروح ہوئے ۔ کم سے کم 96 لوگوں کو گرفتار کیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز